زراعت پاکستانی معیشت کی ریڑھ کی ہڈی ہے، خرم دستگیر -
The news is by your side.

Advertisement

زراعت پاکستانی معیشت کی ریڑھ کی ہڈی ہے، خرم دستگیر

پیرس: وفاقی وزیر تجارت انجینیئر خرم دستگیر نے کہا ہے کہ زراعت پاکستان کی معیشت کے لیے ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے اس دور میں ڈبلیو ٹی او کو ای کامرس کی ترویج پر توجہ دینی چاہیئے۔

وفاقی وزیر تجارت انجینئر خرم دستگیر خان نے پیرس میں ہونے والے ڈبلیو ٹی او کے وزارتی اجلاس میں پاکستان کی نمائندگی کی۔ ڈبلیو ٹی او کا یہ مختصر وزارتی اجلاس معاشی اور اقتصادی تعاون کی تنظیم کے سالانہ وزارتی اجلاس کے موقع پر ہوا۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر نے زراعت اور ای کامرس سے متعلق عالمی قوانین پر پاکستان کا مؤقف پیش کیا۔ انہوں نے کہا کہ زراعت پاکستان کی معیشت کے لیے ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے۔ زراعت کے شعبے میں حکومتی امداد، مارکیٹ تک رسائی اور کپاس سے متعلق عالمی اداروں میں ہونے والی گفت و شنید کا پاکستان بغور جائزہ لیتا ہے کیونکہ اس کے اثرات براہ راست پاکستان کی زرعی معیشت اور بیس کروڑ عوام پر پڑتے ہیں۔

وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے اس دور میں ڈبلیو ٹی او کو ای کامرس کی ترویج پر توجہ دینی چاہیئے۔ اس سلسلے میں ترقی پذیر ممالک میں ای کامرس کے فروغ اور قوانین کے اجرا کے لیے تکنیکی مہارت بھی فراہم کرنی چاہیئے۔

وفاقی وزیر نے اجلاس میں شرکت کے لیے آئے ترکی کے نائب وزیر برائے معیشت فتح میتن سے بھی ملاقات کی اور دو طرفہ تجارتی تعاون اور آزاد تجارتی معاہدے پر مذاکرات پر پیش رفت پر تبادلہ خیال کیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں