The news is by your side.

Advertisement

بڑی پیش رفت ، پاک بھارت آبی تنازعات پر مذاکرات کا آغاز 23 مارچ کو نئی دلی میں ہوگا

اسلام آباد : آبی تنازعات پر پاکستان اور بھارت کے درمیان مذاکرات کا آغاز 23 مارچ کو نئی دلی ہوگا ، جس میں پاکستان دریائے چناب پر متنازع آبی منصوبوں پراعتراضات اٹھائے گا۔

تفصیلات کے مطابق پاک بھارت آبی تنازعات کے معاملات میں اہم پیش رفت سامنے آئی ، پاکستان نئی دہلی میں ہونے والے انڈس واٹر کمشنرز اجلاس میں شرکت کرے گا۔

پاکستان پاک بھارت کےآبی مذاکرات23اور24مارچ کونئی دلی میں ہونگے ، جس میں انڈس واٹرکمشنرمہرعلی شاہ،ترجمان دفترخارجہ زاہد حفیظ شرکت کریں گے، مذاکرات میں پاکستان دریائےچناب پرمتنازع آبی منصوبوں پراعتراضات اٹھائے گا۔

انڈس واٹرکمشنرمہرعلی شاہ کا کہن ہے کہ 23اور24مارچ کو2روزہ آبی مذاکرات میں نئی دلی میں شرکت کرینگے، پکل ڈل اور ریتلے سمیت 4 بھارتی آبی منصوبوں پر اپنے مؤقف پر قائم ہیں۔

یاد رہے 2سال قبل پاک بھارت آبی مذاکرات لاہورمیں ہوئے تھے ، مذاکرات میں پاکستانی حکام کا کہنا تھا کہ پکل ڈل، لوئرکلنائی پن بجلی گھروں کے ڈیزائن پراعتراض ہے اور مطالبہ کیا تھا پکل ڈل پن بجلی ذخیرہ کرنےکی سطح اونچائی میں 5میٹرکمی کی جائے اور سپل ویز کے گیٹوں کی تنصیب میں 40 میٹراونچائی کا اضافہ کیا جائے گا جبکہ پن بجلی گھرکی جھیل بھرنےاورپانی چھوڑے کا پیٹرن واضع کیا جائے۔

خیال رہے پاکستان کا موقف تھا کہ بھارت مغربی دریاؤں پر ڈیم تعمیر کرکے پاکستان کو خشک سالی کا شکار کردینا چاہتا ہے جو کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان موجو د ’سندھ طاس معاہدے‘ کی خلاف ورزی ہے، اس سے قبل بھی پاکستان ان بجلی گھروں کے ڈیزائن پر اعتراضات اٹھا چکا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں