The news is by your side.

Advertisement

پاکستان موجودہ حالات میں بھارت کے ساتھ بیٹھنے کو تیار نہیں: وزیر خارجہ

اسلام آباد: وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ بھارت میں موجودہ حالات کے پیش نظر پاکستان اس کے ساتھ بیٹھنے کو ذہنی طور پر تیار نہیں ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں آج پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیر خارجہ نے کہا کہ 5 ماہ ہو گئے کشمیر میں کرفیو کا نفاذ ہے، مسجدوں پر تالے ہیں، سیکڑوں سال پرانی مسجد کو شہید کر کے رام مندرکی تعمیرجاری ہے، متنازع قانون کے خلاف پورے بھارت میں احتجاج جاری ہے، 25 سے زائد اموات ہو چکیں، ہزاروں لوگ سڑکوں پر ہیں، ایسے میں پاکستان بھارت کے ساتھ بیٹھنے کو تیار نہیں ہے۔

انھوں نے بھارت کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے مقبوضہ کشمیر میں لوگوں کا جینا دوبھر کر دیا ہے، آسام، ویسٹ بنگال، مدھیہ پردیش میں جو کچھ ہوا وہ آپ کے سامنے ہے، اس وقت بھارت بالکل تقسیم دکھائی دے رہا ہے، جوکچھ پہلے ہوتا رہا، اس ایکٹ کی شکل میں لوگوں کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو کر سامنے آیا۔

وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ اطلاعات کے مطابق ایل او سی پر 5 جگہوں سے باڑ کو کاٹا گیا ہے، ایل او سی پر میزائل بھی نصب کیے گئے ہیں، بھارت کے جارحانہ اقدامات دنیا کو دکھائی دے رہے ہیں، بھارت انسانی حقوق کی پامالی، بچوں کو ہراساں کر رہا ہے، مریضوں کو سہولت نہیں دے رہا، آج کے زمانے میں جو انسانی حقوق کے علم بردار ہیں ان کو پبلک سیفٹی ایکٹ اور اس قسم کے کالے قانون کا نوٹس لینا چاہیے۔

شاہ محمود نے کہا کہ میں نے ساتواں خط اقوام متحدہ کو بھیجا، چین نے میرے خط کو بنیاد بناتے ہوئے مطالبہ کیا کہ یو این ملٹری آبزرور صورت حال پر سلامتی کونسل کو بریفنگ دیں، ہم اپنی ذمہ داریوں سے غافل نہیں، سفارتی اور سیاسی محاذ پر جو کیا جا سکتا ہے وہ کیا جا رہا ہے۔ انھوں نے مزید کہا کہ بھارت میں جو کشمیر کا رد عمل سامنے آیا یہ ان کی توقع کے برعکس ہے، اس وقت کوئی قابل احترام لیڈر ایسا نہیں جو ان کے مؤقف کا ساتھ دے رہا ہو، پاکستان ان حالات میں انڈیا کے ساتھ بیٹھنے کو ذہنی طور پر تیار نہیں۔

شاہ محمود کا کہنا تھا کہ حکومت پاکستان نے کشمیر کے مسئلے پر بھرپور آواز اٹھائی، سعودی وزیر خارجہ تشریف لائے تھے ان سے بھی ذکر کیا کہ او آئی سی فورم پر بھرپور طریقے سے اس کے لیے آواز اٹھنی چاہیے، سعودی وزیر خارجہ نے یقین دلایا کہ مؤثر طریقے سے آواز اٹھے گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں