The news is by your side.

Advertisement

پاکستان نے اقوام متحدہ میں امن دستوں کو چیلنجز پرلائحہ عمل پیش کردیا

نیویارک: اقوام متحدہ میں پاکستانی سفیر ملیحہ لودھی نے کہا کہ اقوام متحدہ کوچاہیے وہ امن دستوں کی تعیناتی میں سست روی کا جائزہ لے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان نے اقوام متحدہ میں امن دستوں کو چیلنجز پرلائحہ عمل پیش کردیا، لائحہ عمل مستقل مندوب ملیحہ لودھی نے اجلاس کے دوران پیش کیا۔

امن دستے بھیجنے والے ممالک کا گروپ ڈاکٹر ملیحہ لودھی نے 2017 میں بنایا تھا، گروپ امن دستے بھیجنے والے ممالک کے تجربات پر اداروں سے مشاورت کرتا ہے۔

پاکستانی سفیر ملیحہ لودھی نے کہا کہ پاکستان دنیا میں سب سے زیادہ امن دستے بھیجنے والے ممالک میں شامل ہے، اقوام متحدہ کو چاہیے وہ امن دستوں کی تعیناتی میں سست روی کا جائزہ لے۔

ڈاکٹر ملیحہ لودھی نے کہا کہ تعنیاتی میں تاخیر سے مالی اور تکنیکی نقصان ہوتا ہے، خمیازہ امن دستے بھیجنے والے ممالک کو بھگتنا پڑتا ہے۔

پاکستان نے 46 امن مشنزمیں 2 لاکھ سے زائد فوجی اورپولیس اہلکاربھیجے، ملیحہ لودھی

یاد رہے کہ رواں ماہ 12 جولائی کو اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ملیحہ لودھی کا کہنا تھا کہ فوجی دستے بھیجنے والے ممالک زمینی حقائق سے باخبر ہوتے ہیں۔

پاکستانی سفیر کا کہنا تھا کہ پاکستان 6 دہائی سے اقوام متحدہ امن مشنزمیں دستے بھیج رہا ہے، پاکستان نے 46 امن مشنزمیں 2 لاکھ سے زائد فوجی اورپولیس اہلکاربھیجے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں