The news is by your side.

Advertisement

پاکستان رینجرز اور بی ایس ایف حکام میں مذاکرات

لاہور: پاکستان رینجرز اور بھارتی بارڈر سیکورٹی فورسز کے مابین مذاکرات کا پہلا دور منعقد ہوا جس میں بھارت کی جانب سے پٹھان کوٹ واقعہ کو ایجنڈے کا حصہ بننے کی تجویز مسترد کردی گئی پاکستان کا موقف تھا کہ پٹھان کوٹ واقعہ بھارت کا اندورنی معاملہ ہے۔

رینجرز ہیڈکوارٹر لاہور میں پاک بھارتی سیکورٹی مذاکرات میں پاکستان کی جانب سے ڈی جی رینجرز میجر جنرل عمرفاروق برقی نے میزبانی کے فرائض انجام دیے جبکہ بھارت کے 24 رکنی وفد کی قیادت ڈی جی بی ایس ایف کرشن کمار شرما نے کی ۔

پاک بھارت سیکورٹی فورسز کے مذاکرات کا پہلا دور خوشگوار ماحول میں ہوا ، تاہم اجلاس میں دونوں ممالک کی فورسز نے ایک دوسرے پر سیز فائر کی خلاف ورزیوں کے الزامات عائد کئے۔

اجلاس میں بادرڈر پر سمگلنگ کو روکنے ، غلطی سے سرحد پار کرکے جانے والوں کی فوری رہائی اور کنٹرول لائن پر بلا اشتعال فائرنگ روکنے کے معاملات بھی زیر بحث آئے۔

پاک بھارت سیکورٹی فورسز کے مذاکرات کا حتمی دور جمعرات کے روز کو ہوگا جس کے بعد مشترکہ اعلامیہ جاری کیا جائے گا،24 رکنی وفد کو آج لاہور میں عشائیہ دیا جائے گا ۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں