کلبھوشن کیس: پاکستان نےبھارتی وزارتِ خارجہ کا موقف مسترد کردیا -
The news is by your side.

Advertisement

کلبھوشن کیس: پاکستان نےبھارتی وزارتِ خارجہ کا موقف مسترد کردیا

اسلام آباد: پاکستان نے کلبھوشن یادیو سے متعلق بھارتی وزارت خارجہ کا بیان مسترد کرتے ہوئےباہمی قونصلر رسائی معاہدے پر موثر عمل درآمد کی یقین دہانی کرائی ہے۔

تفصیلات کےمطابق ترجمان دفتر خارجہ نفیس زکریا کا کہنا ہے کہ 2008 کا معاہدہ قیدیوں کی فہرستوں کے سال میں دو مرتبہ تبادلہ کا پابند کرتا ہے لیکن کلبھوشن یادیو بھارتی بحریہ کا حاضر سروس افسر اور’را‘ کا ایجنٹ ہے۔

نفیس ذکریا کا کہناہےکہ کلبھوشن کو’را‘ نے دہشت گردی اور جاسوسی کے لیے پاکستان بھیجا ہے اس لیے کلبھوشن یادیو کے معاملے کو سول قیدیوں کے ساتھ نہیں جوڑا جا سکتا۔


پاکستان نے بھارتی قیدیوں کی فہرست بھارت کے حوالے کردی


ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ یکم جولائی کو دونوں ممالک کی جیلوں میں بند دوسرے کے قیدیوں کی فہرستوں کا تبادلہ کیا گیا، پاکستان نے سزا پوری کرنے والے پانچ بھارتی قیدیوں کو22 جون کو وطن واپس بھیج دیا اورسزا پوری کرنے والے 20 پاکستانی سول قیدی تاحال بھارت سے واپسی کے منتظر ہیں۔


کلبھوشن یادیو نے آرمی چیف سے رحم کی اپیل کردی، جرائم کے اعتراف کی نئی ویڈیو جاری


ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق بھارت کی جانب سے پاکستان کو107 ماہی گیروں اور85 شہریوں تک قونصلر رسائی تاحال نہیں دی گئی۔

واضح رہےکہ دفتر خارجہ کے ترجمان نفیس ذکریا نےکہاکہ پاکستانی مریضوں کے میڈیکل ویزوں پر شرائط عائد کرنا بھارت کے انسانی ہمدردی کے دعووں کی نفی ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں