The news is by your side.

Advertisement

پاکستان نے افغان وزارت خارجہ کا پشاور کی مارکیٹ سے متعلق بیان مسترد کر دیا

اسلام آباد: پاکستان نے افغان وزارت خارجہ کی جانب سے پشاور کی مارکیٹ سے متعلق بیان کو مسترد کر دیا ہے، ترجمان وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ پشاورکی مارکیٹ سے متعلق بیان میں حقائق توڑ مروڑ کر پیش کیے گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ترجمان وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ افغان وزارت خارجہ نے حالات، واقعات اور حقائق مسخ کر کے پیش کیے، پشاور مارکیٹ کا مسئلہ مقامی شہریوں اور ایک افغان بینک کے درمیان ہے، کیس میں 1998 میں مقامی شہریوں کے حق میں فیصلہ دیا جا چکا ہے، مقامی انتظامیہ نے بھی فیصلے کی روشنی میں قانون کے مطابق قدم اٹھایا تھا۔

دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ اس صورت حال کو افغان حکام کی طرف سے غلط رنگ دیا گیا، پاکستان کے عدالتی نظام، اور فیصلے پر عمل کو غلط رنگ دینے کی کوشش مسترد کرتے ہیں، افغان قونصل خانے کو صورت حال سے جوڑنا اور احتجاجاً بند کرنا قابل مذمت ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  وزیراعظم نے طور خم بارڈر 24 گھنٹے کھلا رکھنے کے منصوبے کا افتتاح کردیا

ترجمان نے کہا کہ توقع ہے افغان حکام قونصل خانے کی بندش کے فیصلے پر نظر ثانی کریں گے، نجی معاملے کو 2 ملکوں کے تعلقات پر اثر انداز نہیں ہونا چاہیے۔

واضح رہے کہ پاکستان ایک طرف امریکا، افغانستان اور طالبان کے درمیان مذاکرات کے سلسلے میں اہم ترین کردار ادا کر رہا ہے، دوسری طرف اس نے طور خم بارڈر 24 گھنٹے کھلا رکھنے کے اقدامات کر کے افغان عوام کو تحفہ دیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں