The news is by your side.

Advertisement

ملازمین برطرفی کیس: اسٹیل ملز وکیل آئندہ سماعت پر مطمئن کریں، لیبرکورٹ

کراچی: پاکستان اسٹیل ملز کے پچاس فیصد زائد ملازمین کی برطرفیوں سے متعلق کیس میں اسٹیل ملز کے وکیل کو آئندہ سماعت پر عدالت کو مطمئن کرنے کا حکم دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق لیبر کورٹ میں پاکستان اسٹیل سے پچاس فیصد سے زائد مزید برطرفیوں کے لئے دائر درخواست پر سماعت ہوئی،عدالت میں برطرفیوں کی اجازت کیلئے سی ای او اسٹیل مل کی جانب سے درخواست دائر کی گئی تھی۔

لیبر کورٹ میں درخواست ویسٹ پاکستان انڈسٹریز ایکٹ سیکشن گیارہ اے کے تحت دائر کی گئی ، جس میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ پاکستان اسٹیل ملز ملکی خزانہ پر بوجھ ہے، مزید چلانا ممکن نہیں رہا، اسٹیل مل میں مزید چھانٹیوں اور اصلاحات کی اشد ضرورت ہے جبکہ وفاقی حکومت نے بھی اسٹیل مل کی نجکاری کا فیصلہ کیا ہے۔دوران سماعت عدالت نے اسٹیل ملز ملازمین کو عدالت میں شور شرابے سےاجتناب کرنے کا حکم دیا۔

اس موقع پر عدالت نے ریمارکس دئیے کہ اسٹیل مل پاکستان کی بیک بون تھی، دیکھنا ہوگا کیا ایک دم اتنی برطرفیاں کی جا سکتی ہیں؟ کرونا صورتحال میں کیا ملازمین برطرف کئےجاسکتےہیں؟

دوران سماعت عدالت نے اسٹیل ملز کے وکیل سے بھی استفسار کیا کہ کیا کوئی اسیٹیلمنٹ چل رہی ہے؟ کیاپاکستان اسٹیل مل لیبر کورٹ میں کیس داخل کرسکتی ہے؟ بعد ازاں لیبر کورٹ نے کیس کی مزید سماعت چھ جنوری تک ملتوی کرتے ہوئے اسٹیل ملز کے وکیل کو ہدایت کی کہ آئندہ سماعت پر عدالت کومطمئن کریں۔

یہ بھی پڑھیں:  اسٹیل ملز کے 4ہزار 544 ملازمین برطرف

واضح رہے کہ گذشتہ ماہ ستائیس نومبر کو پاکستان اسٹیل ملز سے 4544ملازمین کو برطرف کیا تھا، تمام برطرف ملازمین کو برطرفی خطوط بھیجے گئے تھے، ترجمان پاکستان اسٹیل کے مطابق پاکستان اسٹیل ملز سے 4ہزار544ملازمیں کو نکال دیاگیا ہے اور نکالے جانے والے ملازمین کی فہرست تیارکرلی گئی ہے۔

ترجمان نے بتایا کہ گروپ2،3،4اورجوزکےملازمین کوفارغ کیاگیا ہے ان گروپس میں ٹیچرز، ڈرائیورز، فائرمین، آپریٹرز، صحت اور سیکیورٹی اسٹاف شامل ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں