The news is by your side.

Advertisement

حریت رہنماؤں کی گرفتاری قابل مذمت ہے،نفیس ذکریا

اسلام آباد : پاکستانی دفترخارجہ نے حریت رہنما یاسین ملک کو بہتر طبی سہولت فراہم نہ کرنے اور بھارتی فوج کے ہاتھوں شہید کیے جانے والے بائیس سا لہ طالب علم کے قتل کی بھی شدیدمزمت کی۔

تفصیلات کےمطابق اسلام آباد میں دفترخارجہ کےترجمان نفیس ذکریا نے بتایا کہ حریت رہنما یاسین ملک کی حالت تشویشناک ہےانہیں آئی سی یو میں منتقل کردیا گیا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ کے ترجمان کا کہناتھاکہ حریت رہنمایاسین ملک کوبہترطبی سہولت نہ دینےکی مذمت کرتےہیں۔

تفیس ذکریا نے بتایاکہ علی گیلانی، میرواعظ اور آسیہ اندرابی بھی بھارتی فوج کی حراست میں ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ حریت رہنماؤں کی گرفتاری قابل مذمت ہے۔

مزید پڑھیں:میرے شوہر کی زندگی کوسخت خطرہ ہے،مشعال ملک

دفتر خارجہ کے ترجمان نے بھارتی فوج کے ہاتھوں شہید کیے جانے والے22 سالہ طالب علم جاوید میر کے قتل کی بھی شدید مزمت کی اور کہا جاوید میر مقبوضہ کشمیر کے ضلع بٹگرام کے ایک کالج میں زیر تعلیم تھااور وہ کسی بھی احتجاجی سرگرمیوں میں ملوث نہیں تھا۔

مزید پڑھیں: حریت رہنما یاسین ملک کی حالت تشویش ناک، آئی سی یو منتقل

واضح رہے کہ گزشتہ روز مقبوضہ کشمیر کے اسیر حریت رہنما یاسین ملک کو تشویش ناک حالت میں اسپتال کے آئی سی یو منتقل کردیا گیاتھا جہاں ان کے بائیں بازوں نے کام کرنا چھوڑ دیا،یہ خبرسن کر ان کی اہلیہ بے ہوش ہو گئی تھیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں