The news is by your side.

Advertisement

پاکستان نے سال کے آخری کوارٹر کی رپورٹ ایف اے ٹی ایف کو جمع کرادی

اسلام آباد : پاکستان نے سال کےآخری کوارٹرکی رپورٹ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کوجمع کرادی، ایف اےٹی ایف جائزےکےبعد پاکستان کو مفصل سوالنامہ بھجوائے گا ، رپورٹ اور سوال نامے پر بحث اگلے ماہ فیس ٹو فیس میٹنگ کی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کی گرے لسٹ سے باہرنکلنے کیلئے پاکستان نے کوششیں تیز کردیں، ذرائع کا کہنا ہے کہ پاکستان نے سال کے آخری کوارٹر کی رپورٹ ایف اےٹی ایف کوجمع کرادی، ایف اےٹی ایف7 دسمبر کو پاکستان کی عملدرآمدرپورٹ کا ابتدائی جائزہ لے گا۔

ذرائع کے مطابق ایف اے ٹی ایف سفارشات پر عملدرآمد ،اقدامات پرمفصل رپورٹ جمع کرائی گئی ، رپورٹ میں منی لانڈرنگ کی روک تھام پراقدامات شامل ہیں جبکہ پاکستان نے ٹیرر فنانسگ پراقدامات بھی رپورٹ میں شامل کئے ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ دہشت گردوں کی فنڈنگ کے 700سے زائد کیسز کی تحقیقات کی گئیں، کالعدم تنظیموں کو رقوم فراہم کرنے والے درجنوں افراد کیخلاف کارروائی شامل ہیں۔

ذرائع کے مطابق دہشت گردوں تک رقوم پہنچانےوالوں کے خلاف گھیرا تنگ کیا گیا اور فنڈنگ کرنے والے کئی افراد گرفتار بھی کئے گئے جبکہ کالعدم تنظیموں کے اثاثے ضبط کرکے حکومتی نگرانی میں لے لئے گئے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ مختلف قیمتی جائیدادوں اور ان کےمالکان کے خلاف تحقیقات جاری ہیں، ایف اے ٹی ایف جائزے کے بعد پاکستان کو مفصل سوالنامہ بھجوائے گا، جس کے بعد پاکستان کی رپورٹ اور سوال نامے پر بحث اگلے ماہ فیس ٹو فیس میٹنگ کی جائے گی۔

یاد رہے گزشتہ ماہ فرانس کے دارالحکومت پیرس میں فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا تھا جس میں بھارت کی جانب سے پاکستان کو بلیک لسٹ میں ڈالنے کی کوشش ناکام ہوگئی تھی۔

مزید پڑھیں : ایف اے ٹی ایف : بھارت کی تمام سازشیں ناکام، پاکستان بلیک لسٹ ہونے سے بچ گیا

فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف ) کے صدر کا کہنا تھا کہ پاکستان نے اپنی کارکردگی بہتر کی ہے، فی الحال پاکستان کا نام فروری دو ہزاربیس تک گرے لسٹ میں ہی رہے گا۔

بعد ازاں فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کے ایکشن پلان اور مطالبات پر عمل درآمد کیلئے وزارت داخلہ میں ایف اے ٹی ایف سیل تشکیل دیا گیا ، خصوصی سیل کا مقصد منی لانڈرنگ اور دہشت گردوں کی مالی معاونت روکنے کیلئے اقدامات کو یقینی بنانا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں