The news is by your side.

Advertisement

پاکستان ون چائنہ پالیسی پر چین کے مؤقف کی حمایت کرتا ہے، شاہ محمود

اسلام آباد : وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے پاک چین تعلقات سے متعلق کہا کہ دونوں ممالک نے ہر مشکل وقت میں ایک دوسرے کا ساتھ دیا ہے، پاکستان ون چائنہ پالیسی پر چین کے موقف کی حمایت کرتا ہے۔

ان خیالات کا اظہار وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے چینی ہم منصب وانگ ژی سے ٹیلی فونک رابطے کے دوران کیا، گفتگو کے دوران دونوں رہنماوں نے دوطرفہ، علاقائی و اہم عالمی امور پر تبادلہ خیال کیا۔ اس دوران شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان اور چین کے مابین دوطرفہ تعلقات مثالی نوعیت کے ہیں۔

وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ دونوں نے ہر مشکل وقت میں ایک دوسرتے کا ساتھ دیا، پاکستان ون چائنہ پالیسی پر چین کے موقف کی حمایت کرتا ہے۔

انہوں نے مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی مظالم سے چینی ہم منصب کو آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ بھارت جارحانہ عزائم کی پیروی میں خطے کے امن کو داؤ پر لگا رہا ہے، بھارت داخلی ناکامیاں چھپانے کےلیے ایل او سی پر کشیدگی بڑھا رہا ہے اور اقوام متحدہ اور عالمی قوانین کی مسلسل خلاف ورزی کررہا ہے۔

شاہ محمود نے کہا کہ بھارت علاقائی مسائل کے حل کیلئے جبر و استبداد کا راستہ اپنا رہا ہے، بھارت کے 5 اگست کے اقدامات ہندو توا سوچ کی عکاسی ہیں۔

اس دوران شاہ محمود قریشی نے پاک چین افغان سہ ملکی وزرائے خارجہ مذاکرات کے جلد انعقاد کی ضرورت پر زور دیا اور کہا کہ اقتصادی راہداری منصوبوں کی تکمیل سے روابط کو فروغ ملے گا۔

دونوں رہنماوں نے بین الاقوامی فورمز پر یکساں مقاصد کے حصول کیلئے باہمی تعاون کے فروغ پر اتفاق کیا اور گفتگو میں افغانستان میں قیام امن کیلئے مشترکہ کاوشیں جاری رکھنے پر اتفاق کیا۔

اس دوران چینی وزیرخارجہ نے خطے میں قیام امن کیلئے پاکستان کی کاوشوں کو سراہا اور کہا مشکل گھڑی میں چین کی معاونت پر وزیر خارجہ کا شکریہ ادا کیا۔

چینی وزیرخارجہ نے کہا کہ اقتصادی راہداری فیز 2 بی آر آئی منصوبے کا انتہائی اہم حصہ ہے، منصوبے سے پاکستان میں اقتصادی سرگرمیوں میں اضافہ ہوگا۔

چینی وزیرخارجہ کا چین کی جانب سے ہیلتھ سلک روڈ کی حمایت پر پاکستان کا شکریہ بھی ادا کیا گیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں