ملکی تجارتی خسارہ تاریخ کی بلند ترین سطح پر -
The news is by your side.

Advertisement

ملکی تجارتی خسارہ تاریخ کی بلند ترین سطح پر

اسلام آباد : معاشی ترقی کے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے، پاکستان کا تجارتی خسارہ تاریخ کی بلند ترین سطح پر جا پہنچا، اڑتیس اعشاریہ آٹھ فیصد اضافے کے ساتھ برآمدات اور درآمدات کا فرق تئیس ارب اڑتیس کروڑ ڈالر ہوگیا۔

تفصیلات کے مطابق جاری کھاتوں کے خسارہ میں اضافہ زرمبادلہ زخائر اور برآمدات کم میں کمی اور اب تجارتی خسارہ تاریخ کی بلند ترین سطح تک جا پہنچا ہے، ادارہ شماریات کے مطابق رواں مالی سال کے پہلے نو ماہ میں تجارتی خسارے میں 30 ارب 40کڑور ڈالر سے تجاوز کر گیا جبکہ درآمدات کا حجم تاریخ کی بلند ترین سطح 38 ارب 50کروڑ ڈالر تک پہنچ گیا۔

ادارہ شماریات کا مزید کہنا ہے کہ برآمدات میں زیر غور عرصے کے دوران تین فیصد کی کمی ریکارڈ کی گئی، جولائی تا مارچ صرف پندرہ ارب ڈالر کی برآمدات ہوئیں۔


مزید پڑھیں : ملکی تجارتی خسارہ ریکارڈ سطح پر پہنچ گیا


ادارہ شماریات کا یہ بھی کہنا ہے کہ مارچ میں ایک ارب 80کروڑ ڈالر کی برآمدات ہوئیں، جبکہ درآمدات 5 ارب ڈالر سے زائد رہیں۔

معاشی ماہرین کا کہنا ہے کہ بیرونی کھاتے شدید دباؤ کا شکار ہیں اور صورتحال تشویش ناک ہوگئی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں