The news is by your side.

Advertisement

افغانستان میں مذاکراتی ٹیم کے قیام پر پاکستان کا خیر مقدم

اسلام آباد: افغانستان میں طالبان سے بات چیت کے لیے افغان حکومت نے مذاکراتی ٹیم کا اعلان کیا جس پر پاکستان نے خیرمقدم کیا اور مستقبل کے لیے اہم قرار دیا۔

تفصیلات کے مطابق ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروق نے کہا ہے کہ پاکستان مذاکراتی ٹیم کے قیام سے متعلق افغان قیادت کے اعلان کا خیر مقدم کرتا ہے، اعلان سے انٹرا افغان مذاکرات شروع کرنے کی راہ ہموار ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ افغانستان میں امن قیادت کے عزم کی عکاسی کرنے والا ایک اہم قدم ہے، امریکا طالبان مذاکرات نے پائیدار امن کے لیے تاریخی موقع فراہم کیا، امید ہے فریق مشترکہ مقصد کے طور پر تشدد میں کمی لانے کی کوشش کریں گے۔ دفترخارجہ نے مزید کہا کہ پاکستان ہمسائیوں کے ساتھ مل کر پرامن اور مستحکم افغانستان کی حمایت جاری رکھے گا۔

امریکا طالبان کے درمیان تاریخی معاہدہ، صدر ٹرمپ نے اہم بیان داغ دیا

خیال رہے کہ افغانستان کی حکومت نے طالبان کے ساتھ مذاکرات کرنے کے لیے 21 رکنی ٹیم کا اعلان کر دیا ہے۔ افغان حکومت کی طالبان سے مذاکرات کرنے والی ٹیم میں 5 خواتین بھی شامل ہیں۔

یاد رہے کہ رواں سال فروری میں امریکا اور افغان طالبان کے درمیان تاریخی معاہدہ طے پایا۔ تاریخی امن معاہدے سے متعلق مشترکہ اعلامیہ میں کہا گیا کہ امن معاہدہ 4نکات پر مشتمل ہے، معاہدے کے مطابق امریکا14ماہ میں افغانستان سے تمام فوجی واپس بلالے گا، افغان سرزمین امریکا اور اتحادیوں پر حملے کے لیے استعمال نہیں ہوگی۔

مشترکہ اعلامیے کے مطابق امریکا افغانستان کی علاقائی سالمیت کیخلاف طاقت کے استعمال سے بھی باز رہے گا، امریکا معاہدے کے 135دن کے اندر فوجیوں کی تعداد 8600 تک لائے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں