The news is by your side.

Advertisement

نزاکت علی خان: کلاسیکی موسیقی کے استاد اور نام ور گلوکار کی برسی

استاد نزاکت علی خان کا نام فن و ثقافت کی دنیا میں کسی تعارف اور حوالے کا محتاج نہیں۔ آج پاکستان کے اس نام ور کلاسیکی موسیقار اور گلوکار کی برسی منائی جارہی ہے۔

نزاکت علی خان 14 جولائی 1983 کو راولپنڈی میں وفات پاگئے تھے۔ ان کا تعلق ضلع ہوشیار پور کے چوراسی نامی قصبے سے تھا جو سُروں اور راگنیوں کے ماہر اور موسیقی کے شیدائیوں کے لیے مشہور ہے۔

1932 کو پیدا ہونے والے نزاکت علی خان کا سلسلہ نسب استاد چاند خان، سورج خان سے ملتا ہے جو دور اکبری کے نام ور گلوکار اور تان سین کے ہم عصروں میں شامل تھے۔

استاد نزاکت علی خان کے والد استاد ولایت علی خان بھی اپنے زمانے کے نام ور موسیقار تھے اور انھوں‌ نے والد ہی سے گائیکی سیکھی اور موسیقی کی تعلیم حاصل کی۔

تقسیمِ ہند کے بعد استاد نزاکت علی خان ملتان آگئے اور بعد میں لاہور کو اپنا مستقر ٹھہرا لیا۔

جلد ہی ان کا شمار پاکستان کے نام ور موسیقاروں اور گلوکاروں میں ہونے لگا۔ استاد نزاکت علی خان کو اس فن کی خدمت کے اعتراف میں‌ صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی اور ستارہ امتیاز دیا گیا۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں