آسٹریلیا میں پاکستانی طالبعلم پر نسل پرستوں کا تشدد، شہر چھوڑنے کی دھمکی
The news is by your side.

Advertisement

آسٹریلیا میں پاکستانی طالبعلم پر نسل پرستوں کا تشدد، شہر چھوڑنے کی دھمکی

سڈنی : آسٹریلیا کے شہر نیو کاسل میں پاکستانی طالبعلم کو نسل پرستوں نے تشدد کا نشانہ بنایا اور شہر چھوڑنے کی دھمکی دی۔

تفصیلات کے مطابق آسٹریلیا کے شہر نیو کاسل میں نسل پرستوں نے ہفتے کو لائبریری جاتے ہوئے عبداللہ کی گاڑی کو گھیرا اور اس کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا۔

نسل پرستوں نے پاکستانی طالب علم کو مکا مارا اور شہر چھوڑنے کی دھمکی دی۔


عبداللہ نے بتایا کہ نسل پرستوں نے اُن سے کہا کہ ‘جاؤ پاکستان جاؤ، یہاں سے تمھارا کوئی تعلق نہیں’۔

پولیس نے واقعے کی تحقیقات شروع کردی اور کیپمس گراؤنڈ کے سی سی ٹی وی کیمروں کی بھی مدد لی جارہی ہے۔

اکیس سالہ عبد اللہ قیصر انجینئرنگ کی تعلیم حاصل کرنے کے لیے گزشتہ برس فروری میں نیوکاسل آئے تھے۔


مزید پڑھیں : سڈنی : پاکستانی طالبعلم کو چاقو مار کر قتل کردیا


یاد رہے کہ گذشتہ سال اپریل میں قبل آسٹریلیا کے شہر سڈنی میں پاکستانی طالب علم ذیشان کو چاقوؤں سے حملہ کرکے قتل کردیا گیا تھا، بعد ازاں حملے میں شک کے شہبے میں دو افراد کو گرفتار کیا گیا تھا۔

آسٹریلوی حکام نے واقع کو دہشت گردی قرار دیا تھا اور کہا تھا کہ گرفتار کئے گئے سولہ سالہ نوجوان کے دہشت گردوں سے روابط کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں