The news is by your side.

Advertisement

چین میں مقیم پاکستانی طلبا کو واپس نہ لایا جائے، عذرا پیچوہو

کراچی: وزیر صحت سندھ عذرا پیچوہو کا کہنا ہے کہ چین میں مقیم پاکستانی طلبا کو واپس نہ لایا جائے، حالات کے سازگار ہونے کا انتظار کیا جائے۔

تفصیلات کے مطابق صوبائی وزیر صحت عذرا پیچوہو نے کہا کہ چین میں مقیم پاکستانی طلبا کو واپس نہ لایا جائے، متاثرہ طلبا ممکنہ طور پر وائرس پھیلانے کا سبب بن سکتے ہیں۔

وزیر صحت سندھ کا کہنا تھا کہ چینی قوانین اور صحت عامہ کے پیش نظر طلبا چین میں قیام کریں، حالات کے سازگار ہونے کا انتظار کیا جائے، وائرس کاایک مخصوص وقت ہوتا ہے،مشکل وقت بھی گزر جائے گا۔

کرونا وائرس سے متعق صوبائی وزیر صحت عذرا پیچوہو کا کہنا تھا کہ پاکستان میں کرونا وائرس کا کوئی کیس رپورٹ نہیں ہوا۔

اس سے قبل معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا کی زیر صدارت ایمرجنسی کرونا وائرس کی کور کمیٹی کے اجلاس میں طبی ماہرین کا کہنا تھا کہ پاکستان میں فی الحال کرونا وائرس سے نمٹنے کی سہولتیں موجود نہیں، چین میں موجود پاکستانیوں کو کلیئرنس کے بعد وطن لایا جائے، بغیر کلیئرنس کسی کو بھی پاکستان واپس نہ لایا جائے۔

دوسری جانب ترجمان دفترخارجہ عائشہ فاروقی کا کہنا ہے کہ پاکستانی سفارت خانہ چین میں موجود طلبا سے رابطے میں ہے، کسی ملک نے ابھی تک باقاعدہ چین سے اپنے لوگ نہیں نکالے۔

چین میں 4 پاکستانی طلبہ میں کرونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے، ڈاکٹر ظفر مرزا

یاد رہے کہ گزشتہ روز ڈاکٹر ظفر مرزا نے تصدیق کی تھی کہ چین کے صوبے ووہان میں زیر تعلیم 4 پاکستانی طالب علموں میں بھی کرونا وائرس کی تصدیق ہوچکی ہے۔ چاروں طالب علم تشویش ناک حالت میں اسپتال میں داخل ہیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں