site
stats
انٹرٹینمںٹ

پاکستانی خاتون برطانوی ماسٹر شیف بن گئیں

لندن: پاکستانی نژاد خاتون ڈاکٹر صالحہ محمود نے برطانوی ماسٹر شیف کا اعزاز اپنے نام کرلیا۔ ان کا انعام یافتہ مینیو مغربی اور مشرقی کھانوں کی آمیزش پر مبنی تھا۔

برطانیہ کے شہر ویٹ فورڈ سے تعلق رکھنے والی صالحہ محمود پیشے کے لحاظ سے ایک ڈاکٹر ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ چونکہ وہ طب کے پیشے سے منسلک ہیں لہٰذا وہ کھانا پکانے کے فن کو ایسا بنانا چاہتی ہیں جو حفظان صحت کے اصولوں پر پورا اترے۔

uk-2

صالحہ کو ہمیشہ سے نت نئے پکوان بنانے کا شوق تھا۔

ماسٹر شیف کا اعزاز جیتنے کے بعد انہوں نے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا، ’یہ میری زندگی کا سب سے بہترین کام ہے‘۔

انہوں نے بتایا، ’مجھے اس مقابلے میں آگے رہنے کے لیے سخت محنت کرنی پڑی۔ اسپتال میں 13 گھنٹوں کی شفٹس کے بعد راتوں کو دیر تک جاگ کر پکانا، پھر علیٰ الصبح اٹھ جانا، اس دوران کوئی وقفہ، کوئی چھٹی نہیں، لیکن اب ان سب کا صلہ مل گیا‘۔

صالحہ نے بتایا کہ ان کی دادی اور والدہ پاکستان کے روایتی کھانے نہایت لذیذ بناتی تھیں۔ ’ہمیں لوگوں کو کھلانا اچھا لگتا ہے، یہ گویا ہماری جینز میں شامل ہوچکا ہے‘۔

uk-3

مقابلے میں فاتح کا انتخاب کرنے والے ججز کا کہنا ہے، ’صالحہ نے اپنے روایتی کھانوں کو نہایت جدید اور بہترین انداز میں پیش کیا‘۔

صالحہ کا عزم ہے کہ وہ کھانا پکانے کے حوالے سے کتابیں لکھیں اور خصوصاً موٹاپے پر قابو پانے کے بارے میں بتا سکیں۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top