The news is by your side.

Advertisement

ایشیائی ترقیاتی بینک کی پاکستانی معیشت سے متعلق بڑی پیش گوئی

اسلام آباد : ایشیائی ترقیاتی بینک کا کہنا ہے کہ پاکستان کی شرح نمو رواں سال 4 فیصد تک رہنے کا امکان ہے، گذشتہ مالی سال اقتصادی بحالی اور سخت مالیاتی پالیسیوں سے بہتری آئی۔

تفصیلات کے مطابق ایشیائی ترقیاتی بینک نے پاکستان پر ایشیائی ترقیاتی آوٴٹ لک رپورٹ جاری کردی ، جس میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کی شرح نمو رواں سال 4فیصد تک رہنے کا امکان ہے۔

اے ڈی بی کا کہنا تھا کہ گذشتہ مالی سال اقتصادی بحالی اور سخت مالیاتی پالیسیوں سےبہتری آئی اور ٹھوس اقدامات سے شرح نمو 5.6 فیصد تک ریکارڈ کی گئی۔

ایشیائی ترقیاتی بینک نے کہا کہ کرنٹ اکاوٴنٹ خسارہ کم کرنےکےنتائج مثبت ریکارڈ کیےگئے ،زرمبادلہ کےذخائر میں اضافہ اور افراط زر کم کرنے کی اشد ضرورت ہے اور مؤثر اقدامات سے 2023میں شرح نمو 4.5فیصدتک پہنچنے کی توقع ہے۔

آوٴٹ لک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پاکستانی معیشت مربوط مالی اورمالیاتی اقدامات سے بحال ہو رہی ہے تاہم افراط زر اور عدم توازن پر قابو کے لیے موزوں مالیاتی پالیسیاں اور اصلاحات ضروری ہیں۔

کنٹری ڈائریکٹراے ڈی بی یونگ یئی نے کہا کہ ٹیکس پالیسی اورانتظامی امور میں جامع اصلاحات بیحد ضروری ہیں، عوامی خدمات کو فنڈز فراہم کرنے کے لئے محصولات کو بڑھایا جائے، اے ڈی بی پاکستان کی پائیدار ترقی کی حمایت کے لیے پوری طرح پرعزم ہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ مالی سال 2022 میں صنعتی نمو میں کمی کی پیش گوئی کی گئی ہے، کرنسی کی گراوٹ، تیل اور بجلی کی قیمتوں میں اضافہ نظر آرہا ہے۔

اے ڈی بی نے کہا کہ زراعت کا شعبہ جی ڈی پی بڑھانے کیلئے مثبت اشارے دے رہا ہے اور افراط زر کی شرح مالی سال 2022 ء میں 11 فیصد تک پہنچنے کی توقع ہے جبکہ تیل اور گیس کی بڑھتی قیمتیں افراط زر پر دباوٴ بڑھائیں گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں