The news is by your side.

روس کے ساتھ پاکستان کی تجارت؟ شوکت ترین کا بڑا دعویٰ

اسلام آباد: سابق وزیر خزانہ شوکت ترین کا کہنا ہے کہ روس نے بھی موجودہ حکومت کے ساتھ کسی بھی قسم کی ڈیل نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام ‘ دی رپورٹرز’ میں خصوصی گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیر خزانہ نے کہا کہ روس نے بھی کہہ دیا ہےکہ موجودہ حکومت سے ہم ڈیل نہیں کرینگے کیونکہ ہمیں اس حکومت پر اعتماد نہیں۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ روس کے مطابق آئندہ الیکشن میں عمران خان آئیں گےتو ڈیل کریں گے، روس نےبھی عمران خان پراعتماد کا اظہارکیاہےکیونکہ ان کی مقبولیت ہے۔

پروگرام دی رپورٹرز میں گفتگو کرتے ہوئے موجودہ حکومت پر تنقید کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکومت نےآٹھ ماہ میں جو اقدامات اٹھائے وہ معیشت کیلئےنہیں تھے، حکومت نےمعیشت کےبجائےنیب قوانین میں ترامیم کو ترجیح دی، اپنے کیسزختم کرانے کےعلاوہ حکومت نےمعیشت پر کوئی توجہ نہیں دی۔

آئی ایم کی سخت شرائط کو قبول کیا گیا

سابق وزیر خزانہ نے کہا کہ آئی ایم ایف نے قدغن لگادی کہ پیٹرول کی قیمت کم نہیں کرسکتے کیونکہ آئی ایم ایف کےمطابق پی ڈی ایل کی مد میں850ارب جمع ہونےہیں اور اس مقصد کے لئے پیٹرول،ڈیزل کی مد میں50،50روپے کی پی ڈی ایل شامل کرنا ہے۔

شوکت ترین نے کہا کہ حکومت نےجلدبازی میں ایسےفیصلےکیےجونقصان دہ ثابت ہوئے،آئی ایم ایف سےقرض لیاگیا تو سخت شرائط قبول کرلی گئیں، آئی ایم ایف سےمعاملات بھی جلدبازی میں طےکیےگئے۔

انہوں نے بتایا کہ پا کستان میں ڈالرکی حقیقی شرح مبادلہ100فیصد سےبھی زائد بڑھ چکی، اسٹیٹ بینک نےبھی کہہ دیا ہے کہ حقیقی شرح مبادلہ بہت زیادہ ہوگئی، اب حقیقی شرح مبادلہ225روپےفی ڈالرہے جو کہ ایکویٹی،منی مارکیٹ میں بہت زیادہ سمجھی جاتی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں