The news is by your side.

Advertisement

فلسطینی سفیر نے امریکا کے فلسطین اسرائیل امن پلان کو ناکام قرار دے دیا

غزہ: اقوام متحدہ میں فلسطین کے سفیر ریاض منصور نے امریکا کی جانب سے فلسطین اسرائیل امن پلان کو ناکام قرار دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق فلسطین میں قابض اسرائیلی فوج کی جانب سے جارحیت کا سلسلہ جاری ہے، جہاں نہتے فلسطینیوں کو آئے دن شہید کردیا جاتا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق اقوام متحدہ میں متعین فلسطین کی سفیر منصور ریاض کا کہنا ہے کہ امریکا کی جانب سے اسرائیل فلسطین امن پلان ابتدا میں ہی دم توڑ چکا ہے۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے بعد وہ فلسطین اسرائیل امن پلان کے واحد فریق بننے کا معیار کھو چکے ہیں۔


اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے 15 سالہ فلسطینی لڑکا شہید


فلسطینی سفیر کا کہنا تھا کہ ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے اسرائیل فلسطینی امن پلان کو حتمی شکل دینے میں امریکی صدر کے داماد جیرڈ کشنر اور خصوصی مندوب جیسن گرین بلاٹ مصروف ہیں۔

منصور ریاض کا مزید کہنا تھا کہ فلسطینی صدر محمود عباس ودیگر عہدیدار ایسے کسی پلان کا حصہ نہیں بننا چاہتے جو ابتدا میں ہی ناکام ہوچکا ہو، باوجود اس کے ہم نے اسے قبول کیا، مذکورہ پلان جلد منظر عام پر آئے گا۔

واضح رہے کہ ایک طرف امریکا امن پلان تیار کر رہا ہے تو دوسری جانب صیہونی فورسز نے فلسطین میں ظلم کی انتہا کر رکھی ہے، دو روز قبل ہی اسرائیلی فوج نے چھاپہ مار کارروائی کے دوران ایک فلسطینی نوجوان کو شہید کردیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں