The news is by your side.

Advertisement

پانامہ لیکس الزامات نہیں ثبوت ہیں،عمران خان

ڈیرہ اسماعیل خان: تحریک انصاف کے سربراہ نے کہا ہے کہ نواز شریف نے ایک فیکٹری سے کاروبار کا آغاز کیا لیکن سیاست میں آنے کے بعد 30 فیکٹریوں کے مالک بن گئے ہیں۔

ڈیرہ اسماعیل خان میں ایک بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے چیرمین تحریک انصاف نے کہا کہ ہم جب بھی وزیراعظم سے ناجائز طور پر بنائی گئی جائیداد کا حساب مانتے ہیں وہ کہتے ہیں کہ ہم ملک کو ترقی دے رہے ہیں حالانکہ ترقی ملک کی نہیں نوازشریف کی کاروبار اور جائیداد میں ہو رہی ہے۔

انہوں نے الزام لگایا کہ نوازشریف نے جائیدادیں اپنی بیٹی کے نام پر بنائیں اور منی لانڈرنگ کی،عوام کا حال بد حال ہے اور نواز شریف کے اہل خانہ خوشحال ہو تے جا رہے ہیں۔

عمران خان نے مزید کہا کہ ہمارے یہاں ادارے کمزور اور چھوٹے چوروں کو پکرتے ہیں اور طاقتور کرپٹ حکمرانوں کو تحفط فراہم کرتے ہیں کیوں کہ پورے سسٹم پر درباری حاوی ہیں۔

اپنی تقریر کے دوران انہوں نے پیپلز پارٹی کے سابق صدر آصف علی زرداری کو نواز شریف کا ہمنوا قرار دیتے ہوئے ہدف تنقید کا نشانہ بنایا تو کبھی قائد ایم کیو ایم کی تقاریر پر پابندی لگنے پر شکر ادا کیا کہ پاگل خانے سے ہونے والی تین تین گھنٹے کی تقاریر سے جان چھوٹی،انہوں نے مولانا فضل الرحمٰن کو ڈیزل کے پرمٹ پر بکنے کا طعنہ بھی دیا۔

عمران خان نے اپنے خطاب میں ایک میڈیا چینل کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ایک میڈیا چینل وزیر اعظم کی کرپشن کو چھپانے کی مذموم کوشش میں لگا ہوا ہے۔

عمران خان نے کہا کہ کوئی ملک سے باہر جاتا ہے تو اپنی ماں ،بہن اور بیوی کو فون کرتا ہے لیکن نواز شریف دل کی سرجری کروانے گئے تو نریندر مودی کو فون کرتے ہیں۔

عمران خان نے انصاف اسٹوڈینٹ فیڈریشن کے ناراض کارکنان سے کہا ہے کہ بڑے مقصد کے حصول کے لیے آپس کے معمولی اختلافات کو بھول جائیں اور آپس میں اتحاد برقرار رکھیں،میں ایک ایک کارکن سے بعد میں خود ملوں گا اور سارے تحفظات دور کروں گا۔

عمران خان نے حکومت کو متنبہ کرتے ہوئے کہا کہ اگر پنجاب پولیس کے گلو بٹ ہمیں روکنے کے لیے آئے تو منہ کی کھائیں گے ،وہ پہلے سے ہی سوچ لیں کہ ہمارے ساتھ 2 نومبر کو عوام کا سمندر ہوگا جس کے آگے کوئی نہیں ٹہر سکتا۔

 

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں