The news is by your side.

Advertisement

اپوزیشن کا پانامہ لیکس پرحکومت کو ٹف ٹائم دینے کا فیصلہ

اسلام آباد: اپوزیشن جماعتوں نے پانامہ لیکس کے معاملے پر حکومت کو ٹف ٹائم دینے کا فیصلہ کرلیا۔

قومی اسمبلی کے اجلاس میں پاناما لیکس کے معاملے پر خورشید شاہ کا کہنا ہے کہ حکمران خاندان کے لوگ ٹیکس بچانے کیلئے ملک سے باہر کاروبار کررہے ہیں، بتایا جائے پیسہ ملک سے باہر کیسے گیا۔

اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ پانامہ لیکس کا معاملہ میڈیا یا پی ٹی آئی نے نہیں اٹھایا، انکا کہنا تھا کہ وزیر اعظم نے اپنے خطاب میں دوسروں پرالزامات لگا کر توپوں کا رخ خود اپنی جانب موڑا اور ہمیں جواب دینے پر مجبور کیا ہے۔

اپوزیشن لیڈر کا کہنا ہے کہ پانامہ لیکس پر پیدا ہونے والے اہم سوالات پرجواب جوڈیشل کمیشن بنانا نہیں، بلکہ ایوان کو بتایا جائے کہ برے وقت میں ہی سہی پیسہ باہر بھجوایا تو کیسے؟ کیا پیسے منی لانڈرنگ سے باہر گئے یا کسی اور طریقے سے، معاملے کا غیر ملکی کمپنیوں سے آڈٹ کرانے سمیت اس پر ایک عالمی تحقیقات کمیشن مقرر کیا جائے۔

قومی اسمبلی میں بحث میں حصہ لیتے شیخ رشید احمد نے کہا کہ سپریم کورٹ کے جسٹس کی نگرانی میں کمیشن نہ بنا تو حکومت کے گرد گھیرا تنگ ہو جائے گا۔انہوں نے کہا کہ حکومت حالات و معاملات کو پرکھنے کی کوشش کرے،ورنہ حکمران برے حالات میں پھنس جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ اب اگر پی ٹی آئی ایوان سے گئی تو کبھی واپس نہیں آئے گی۔نواز شریف کا کاندان باہر سرمایہ کاری کرے گا تو اور کوئی پاکستان میں سرمایہ کاری کیوں کرے گا۔

شیخ رشید احمد نے انکشاف کیا کہ نواز شریف کو کسی نے زبردستی جلا وطن نہیں کیا تھا بلکہ وہ کود اپنی خواہش پر جلا وطن ہوئے،انہوں نے کہا کہ شہباز شریف جلا وطن نہیں ہونا چاہتے تھے۔شاہد خاقان عباسی نواز شریف کی اپنی مرضی کی جلا وطنی اور شہباز شریف کے انکار کی گواہی خود دیں گے۔

دوسری جانب اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ سے تحریک انصاف کے رہنما شاہ محمودقریشی نے ملاقات کی، اس موقع پر دونوں رہنماؤں نےپاناما لیکس پر مشترکہ حکمت عملی اپنانے کا فیصلہ کیا۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پاناما لیکس پاکستان کی بدنامی کا با عث بنی ہے، وزیراعظم اورانکی فیملی کاپاناما لیکس میں ذکر آنا انتہائی سنگین ہے، شاہ محمود قریشی نے مزید کہا کہ چاہتے ہیں پارلیمنٹ میں پاناما لیکس پر بات ہو اور بات ضرور ہوگی ۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں