site
stats
لائف اسٹائل

تصویری رپورٹ: چترال میں پیراگلائیڈنگ کا شوق عام ہونے لگا

پیراگلائیڈنگ ایک مہنگا شوق ہے اور اب تک نیپال اور کچھ دیگر ملکوں میں ہی ممکن تھا تاہم اب کچھ مقامی پائلٹس اس مہنگے کھیل کو پاکستانی عوام تک پہنچانے کے لیے سرتوڑ کوشش کررہے ہیں۔

13

چترال سے موصول ہونے والی تصاویر میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ہندوکش ایسوسی ایشن آف پیراگلائڈرز کے ممبران بالائی چترال کے ققلاشت نامی میدان میں مشق کررہے ہیں۔


پیراگلائیڈنگ – مہنگا شوق اب پاکستان میں سستے پیسوں میسر ہے


15

چترال پیراگلائیڈنگ کے لیے انتہائی موضوع علاقہ ہے یہاں بہت سے ایسے مقامات ہیں جہاں سے با آسانی اڑان بھری جاسکتی ہے اور گھنٹوں پرواز کے بعد انہی مقامات پر دوبارہ اترا جاسکتا ہے۔

14

مقامی پائلٹ سیف اللہ جان کا کہنا ہے کہ یہاں کا جغرافیائی حالات اور مناظر نہایت موزوں ہے اور ہندوکش ایسوسی ایشن فار پیرا گلائڈنگ کو اگر حکومت کا ذرا سا بھی تعاون حاصل ہو تو یہ دنیا بھر کے سیاحوں کو یہاں کھینچ کرلاسکتے ہیں۔

16

انہوں نے مزیدکہا کہ اگر حکومت ان کے ساتھ تعاون کرے اور ان کی ایسوسی ایشن کی حوصلہ افزائی کرے تو وہ سالانہ کروڑوں روپے اس صنعت سے کما سکتے ہیں۔

37

بیر موغ لشٹ پہاڑ کے اوپر بیس سال پہلے پی ٹی ڈی سی ہوٹل کی بہترین عمارت بنائی گئی تھی مگر جب سے وہ بنا ہوا ہے اسی وقت سے بند پڑا ہے اور اربوں روپے کا یہ عمارت ایک بھوت بنگلے کا منظر پیش کرتا ہے جو آہستہ آہستہ گر کر زمین بوس ہونے والا ہے۔

38

انہوں نے وفاقی اور صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا کہ بیر موغ لشٹ میں پندرہ سالوں سے بند پی ٹی ڈی سی ہوٹل ان کے حوالہ کیا جائے تاکہ وہ اسی ہوٹل کے لان سے پرواز کرنے کےلئے بین الاقوامی سطح پر پیرا گلائڈرز پائلٹ بلائیں ،اس سے چترال کی معیشت پراچھے اثرات پڑیں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top