The news is by your side.

Advertisement

کومے سے مفلوج خاتون کے ہاں بچے کی پیدائش‘ حکومتی امداد کی منتظر

ہری پور: خاوند کے تشدد کے سبب کومے میں چلی جانے والی مفلوج خاتون کے ہاں بچے کی پیدائش ہوئی ہے‘ حکومت نے مدد کرنے کے بجائے تنخواہ بھی روک دی۔

تفصیلات کے مطابق متاثرہ خاتون کے خاونداعجازنے مبینہ طور پراس سے بھاری رقم کا تقاضہ کیا جس سے انکار پر اعجاز اور اس کی دوسری بیوی روبینہ نے مل کر اسے بدترین تشدد کا نشانہ بنایا، اس کے سر پر لوہے کے سریے سے وار کئے جس سے یہ کومہ میں چلی گئی۔

ڈاکٹروں کے مطابق تین ماہ تک کومہ میں رہنے کے بعدجب خاتون کو ہوش آیا تو اس کا جسم کا ایک حصہ مفلوج ہو کر رہ گیا تھا، متاثرہ خاتون نے ایبٹ آباد کے ایوب میڈیکل کمپلکس میں جسمانی طور پر مفلوج حالت میں بچے کا جنم دیا۔

ثمینہ کوثر نامی یہ خاتون ہری پور کے نواحی علاقے رنگیلا روڈ کی رہائشی چوبیس سالہ ثمینہ کوثر کو گورنمنٹ ڈگری کالج میں بطور لیبارٹری اٹینڈنٹ ملازمت سرانجام دے رہی تھی۔

دوسری جانب کالج نے اس متاثرہ خاتون سے ہمدردی تو دور کی بات اس کی ماہانہ تنخواہ بھی پانچ ماہ سے بند کررکھی ہے،متاثرہ خاتون ایبٹ آباد میں کسماپرسی کی زندگی گزارنے پر مجبور وزیر تعلیم اور صوبائی حکومت سے مدد اور اپنے اوپر ہونے والے مظالم پر انصاف کی منتظر ہے۔

ماہر نفسیات ڈاکٹر احسن نوید کا کہنا ہے کہ اگرمتاثرہ خاتون کو مختلف کاموں میں مصروف رکھا جائے تو اسے واپس صحت مند زندگی کی جانب لوٹایا جا سکتا ہے ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں