site
stats
عالمی خبریں

پیرس میں مہاجرین پرلاٹھی چارج اورشیلنگ

پیرس : فرانسیسی دارالحکومت پیرس میں تارکین وطن کے کیمپوں کوختم کرنے کےلیےپولیس نےپتھروں کے بلاکس کا استعمال کیا ہے۔

تفصیلات کےمطابق پیرس میں پولیس نےمہاجرین کےغیر قانونی کیمپوں کےخاتمے کے لیے لاٹھی چارج اورآنسو گیس کا استعمال کیااور ان کے بیگز اور دیگر اشیاء بھی ضبط کرلیں۔

post-1

پیرس میں ٹریفک جزیرے کےنام سے مشہور جگہ ہےجہاں مہاجرین کوسونےکے لیے کمیپس لگانے سے روکنے کےلیے پولیس نےپتھروں کے بڑے بلاکس رکھ دیے۔

post-2

ریلوے پل کی یہ جگہ مہاجرین کےلیےمقرر کی گئی پناہ گاہ سےکچھ ہی دوری پر واقع ہے لیکن وہاں صرف 400 بستر موجود ہیں جبکہ مہاجرین کی تعداد بہت ذیادہ ہونےکی وجہ سےانہیں شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

post-3

محمد نامی تارکین وطن کا کہناہےکہ چونکہ حکومت کی جانب سے مقرر کی گئی جگہ پر صرف 400 لوگوں کے رہنے کی گنجائش ہے جو بہت کم ہےاور اگر کوئی شخص اس جگہ کے آس پاس بھی سوتا ہےتووہاں اس کےساتھ غیرانسانی رویہ اپنایاجاتاہے۔

post-4

فرانس کے دارالحکومت پیرس میں اس وقت تقریباََ آٹھ ہزار تارکین وطن موجود ہیں جن میں خواتین اور بچوں کی بڑی تعداد موجود ہے۔

post-5

دوسری جانب پیرس سٹی کونسل کے ترجمان کا کہناہےکہ ہم مہاجرین کے خلاف نہیں،انہوں نےکہا ہمارے اس اقدام کا مقصد ان کی زندگیوں کو محفوظ بنانا ہے کیونکہ اس طرح ریلوے پل کےنیچےیاریلوے اسٹیشن کے قریب سونا خطرناک ہے۔

post-6

واضح رہےکہ تارکین وطن کا کہناہے کہ پیرس حکومت چاہتی ہے کہ ہم یہاں سے چلے جائیں اسی لیےان کی جانب سے ہمارے خلاف لاٹھی چارج اور آنسوگیس کا استعمال کیاگیا۔

post-8

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top