The news is by your side.

پروین رحمان قتل کیس: بری ہونے والے ملزمان نے 3 ماہ کی نظر بندی کو عدالت میں چیلنج کردیا

کراچی : پروین رحمان قتل کیس میں بری ہونے والے ملزمان نے تین ماہ کی نظر بندی کو سندھ ہائی کورٹ میں چیلنج کردیا۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائی کورٹ میں پروین رحمان قتل کیس میں بری ہونے والے ملزمان نے تین ماہ کی نظر بندی کیخلاف درخواست دائر کردی۔

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ سندھ ہائی کورٹ نے ملزمان کو بے گناہ قرار دیتے ہوئے بری کردیا تھا، بریت کے بعد صوبائی حکومت نے احمد خان، امجد سواتی،ایاز سواتی، عبدالرحیم سواتی اور عمران سواتی کو نظر بند کردیا، ملزمان کی نظر بندی بلاجواز اور غیر قانونی ہے۔

عدالت نے صوبائی حکومت کو بارہ دسمبر کیلئے نوٹس جاری کرتے ہوئے سیکریٹری ہوم اور آئی جی سندھ کو متعلقہ مواد اور رپورٹ کے ساتھ پیش ہونے کا حکم دے دیا۔

عدالت نے درخواست کی نقول پراسیکیوٹر جنرل کو آج ہی فراہم کرنے کی ہدایت کردی۔

یاد رہے سندھ ہائی کورٹ نے پروین رحمان قتل کیس میں ملزمان کی سزاؤں کے خلاف اپیلوں پر فیصلہ سنایا تھا۔

عدالت نے ملزمان کی سزاؤں کے خلاف اپیلیں منظور کرتے ہوئے سزائیں کالعدم قرار دے دیں اور کہا تھا کہ ملزمان دوسرے کیسزمیں مطلوب نہیں تو رہا کر دیا جائے۔

واضح رہے پروین رحمان کو 13 مارچ2013 میں قتل کیا گیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں