The news is by your side.

Advertisement

لاہور:ضلعی حکومت کا پی اے ٹی کو مال روڈ پر جلسے کی اجازت سے دینے سے انکار

لاہور : لاہور کی ضلع حکومت نے پاکستان عوامی تحریک اور متحدہ اپوزیشن کومال روڈ پر جلسےکی اجازت دینے سے انکار کردیا۔

تفصیلات کے مطابق لاہورمیں سیاسی کشمکش اپنےعروج پرپہنچ گئی، ضلع حکومت نے پاکستان عوامی تحریک اور متحدہ اپوزیشن کومال روڈ پر جلسےکی اجازت دینے سے انکار کردیا۔

ضلع انتظامیہ کا کہنا ہے کہ لاہور ہائیکورٹ نے مال روڈ پر احتجاج پر پابندی عائد کر رکھی ہے۔

یاد رہے کہ پی اے ٹی کی جانب سے مال روڈ پر جلسے کیلئے ڈپٹی کمشنر کو درخواست دی گئی تھی۔

دوسری جانب ضلعی حکومت نے متحدہ اپوزیشن کو احتجاج روکنے کیلئے 25نکات پر مشتمل نوٹس جاری کردیا۔

ضلعی حکومت لاہور کی جانب سے متحدہ اپوزیشن کو مال روڈ پر احتجاج روکنے کیلئے بھجوائے جانے والے نوٹس میں لاہور ہائی کورٹ کے حکم کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا کہ عدالت عالیہ کی جانب سے مال روڈ پر ہر قسم کی سیاسی سرگرمی اور احتجاج پر پابندی ہے۔

نوٹس میں واضح کیا گیا کہ اگر مال روڈ پر احتجاج کے دوران حالات کشیدہ ہوئے تو اسکی ذمہ داری متحدہ اپوزیشن پر عائد ہو گی۔

ڈپٹی کمشنر کے نوٹس میں دئیے جانے والے ضابطہ اخلاق کے تحت اگر مال روڈ پر جلسے کے دوران کوئی ناخوشگوار واقعہ یا توڑپھوڑ ہوئی تو ذمہ دار متعلقہ سیاسی جماعتیں ہوں گی۔

نوٹس کے مطابق پنجاب پولیس کو احتجاج کرنے والوں کی فہرست فراہم کی جائے مال روڈ پر تمام کاروبارکوبندکرنے پرزور نہیں دیاجائے گا، سیاسی دفاتر کے باہر نعرے بازی کی اجازت نہیں ہوگی، سیاسی احتجاج میں کسی بھی شخص کو زبردستی نہیں لایاجاسکے گا۔ فول پروف سکیورٹی کےلئے انتظامیہ پولیس کے ساتھ مکمل تعاون کرے، احتجاجی شرکا کو پرامن رہنے کی ہدایت کی جائے۔

ڈپٹی کمشنر کے نوٹس میں مزید کہا گیا ہے کہ مال روڈ پر احتجاج کی سکیورٹی پنجاب حکومت نہیں بلکہ منتظمین پر ہو گی لیکن پنجاب پولیس بھی سکیورٹی فراہم کرے گی ۔

خیال رہے کہ پنجاب حکومت سے احتجاج کےلئے 6جماعتوں جن میں پی ٹی آئی، پیپلزپارٹی، ق لیگ، پاکستان عوامی تحریک، مجلس وحدت المسلمین اور عوامی مسلم لیگ نے اجازت مانگی تھی۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں