The news is by your side.

Advertisement

عوامی تحریک کے سربراہ طاہرالقادری 2 نومبر تک پاکستان آئیں گے یا نہیں؟

لاہور : عوامی تحریک کے سربراہ طاہر القادری دو نومبر تک پاکستان آئیں گے یا نہیں؟ طاہر القادری کی دھرنا پلس میں شمولیت ملین ڈالرز کا سوال بن گئی، پی اےٹی کے رہنما خرم نواز گنڈا پور نے قائد کی دو نومبر کے دھرنے میں شرکت کے امکانات کو ففٹی ففٹی قرار دے دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز جڑواں شہروں کے حالات نے نئے سیاسی منظر نامے کو جنم دے دیا ہے، پی ٹی آئی یوتھ کنونشن پر ہلہ بولنے کے بعد شیخ رشید کے جلسے پر دھاوے نے عمران خان اور شیخ رشید کے دیرینہ دوست ڈاکٹر طاہر القادری شرکت اہمیت اختیار کر گئی ہے۔

عوامی مسلم لیگ کےسربراہ شیخ رشید کو طاہرالقادری کی آمد کے کوئی آثار نظر نہیں آرہے، انکا کہنا ہے کہ پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ سے رابطے میں ہوں، فی الحال دو نومبر کے دھرنے میں شرکت کا امکان نہیں۔

دوسری جانب پی اے ٹی کے رہنما خرام نواز گنڈا پور نے طاہرالقادری کی آمد کے امکانات کو ففٹی ففٹی قرار دے دیا ہے۔


مزید پڑھیں : پنڈی اسلام آباد کی سڑکوں پرجمہوریت کو گھسیٹا گیا، ڈاکٹرطاہرالقادری


اےآروائی نیوز کے پروگرام الیونتھ آور میں خرم نواز گنڈا پور کا کہنا تھا کہ واپسی سے متعلق حتمی تاریخ نہیں دے سکتے، پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ نے کارکنوں کو حکومت مخالف دھرنے میں شرکت کی ہدایت پہلے ہی کردی ہے۔

گزشتہ روز تحریک انصاف کے کارکنان پر پولیس تشدد اور گرفتاریوں کی پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہرالقادری نے مذمت کرتے ہوئے کہا تھا کہ راولپنڈی اور اسلام آباد کی سڑکوں پرجمہوریت کو گھسیٹا گیا،عمران خان اور شیخ رشید کا جرم بتایا جائے، ان دونوں رہنماؤں نے کیا جرم کیا کہ ان پر اپنے ہی وطن کی زمین تنگ کی جارہی ہے۔


مزید پڑھیں : طاہرالقادری نے اسلام آباد دھرنے میں شرکت کی دعوت قبول کرلی


یاد رہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہرالقادری کو دھرنے میں شرکت کی دعوت دے دی، جو انہوں نے قبول کرلی تھی جبکہ شیخ رشید نے دعوت قبول کرنے سے متعلق تصدیق کی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں