The news is by your side.

Advertisement

دہشت ناک فلمیں دیکھنے والوں کے لیے لاکھوں روپے کمانے کا موقع

فلوریڈا: دہشت ناک فلمیں‌ دیکھنے کے شوقین افراد اب دو لاکھ روپے کما سکیں گے، امریکی کمپنی نے اعلان کیا ہے کہ اگر کوئی شخص اس کی نگرانی میں 13 عدد ہارر فلمیں دیکھے گا تو اسے 1300 ڈالر (2 لاکھ 18 ہزار پاکستانی روپے) دیے جائیں گے۔

یہ اعلان ’فائنانس بز‘ نامی ایک میڈیا کمپنی نے کیا ہے جو عام لوگوں کو مالیاتی امور سے متعلق مشورے دیتی ہے۔

واضح رہے کہ دہشت ناک فلموں میں ناظرین کو خوف زدہ کرنے والی آوازوں اور مناظر پر خصوصی توجہ دی جاتی ہے لیکن ضروری نہیں کہ ہارر فلم دیکھنے والا خوف کے احساس میں مبتلا بھی ہو جائے۔

اس تجربے کے ذریعے ’فائنانس بز‘ یہ جاننا چاہتی ہے کہ کم اور زیادہ بجٹ والی ہارر فلمیں ناظرین کو کس حد تک خوف زدہ کرتی ہیں، یعنی کسی ہارر مووی پر آنے والی لاگت اور اس کے ’دہشت ناک‘ ہونے میں کوئی تعلق ہے یا نہیں؟ اس مقصد کےلیے کسی ایک شخص کو منتخب کیا جائے گا، جسے دل کی دھڑکنوں پر نظر رکھنے والے فٹ بِٹ (FitBit) آلے سے لیس ہونے کے بعد 13 ہارر فلمیں دیکھنا ہوں گی۔

اعلان کے مطابق یہ فلمیں اسے گھر پر اکیلے بیٹھ کر دیکھنا ہوں گی جب کہ اس دوران ’فٹ بِٹ‘ سے اس کے دل کی دھڑکنوں میں ہونے والے اتار چڑھاؤ نوٹ کیے جاتے رہیں گے۔

اس تجربے کے لیے جن فلموں کا انتخاب کیا گیا ہے ان میں ایمٹی ویلی ہارر، اے کوائٹ پلیس (پارٹ 1 اور 2)، کینڈی مین، انسیڈیئس، دی بلیئر وِچ پروجیکٹ، سنسٹر، گیٹ آؤٹ، دی پرج، پیرانارمل ایکٹیویٹی اور ہیلووین (2018، ری میک) شامل ہوں گی۔

منتخب ہونے والے شخص کو 1300 ڈالر کے علاوہ 50 ڈالر مالیت کا گفٹ کارڈ بھی دیا جائے گا تاکہ وہ ان فلموں کو (اسٹریمنگ سروس سے) دیکھنے کا معاوضہ دے سکے۔

اس انوکھے تجربے کےلیے امریکا میں رہنے والا کوئی بھی شخص درخواست دے سکتا ہے، کمپنی کی ویب سائٹ پر رجسٹریشن شروع ہو چکی ہے، جو 26 ستمبر 2021 تک جاری رہے گی، اور منتخب فرد کا اعلان یکم اکتوبر کو کیا جائے گا۔ اس کے بعد منتخب فرد کو 9 سے 18 اکتوبر تک یہ تمام ہارر فلمیں (فِٹ بِٹ پہن کر) دیکھنا ہوں گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں