The news is by your side.

Advertisement

پی ڈی ایم کا اجلاس : پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ ن نے تجاویز تیارکر لیں

لاہور : پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ ن نے پی ڈی ایم سربراہی اجلاس کے لیے تجاویز تیارکر لیں ، جس میں پی پی نے استعفوں، لانگ مارچ اور ضمنی انتخابات کی حکمت عملی سے اختلاف کا فیصلہ کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق حکومت مخالف تحریک کے لیے پی پی اورشہبازشریف کی ایک رائے سامنے آگئی، ذرائع کا کہنا ہے کہ پیپلزپارٹی نے سربراہی اجلاس کے لیے تجاویز تیارکر لیں، جس میں پی پی نے استعفوں ،لانگ مارچ اور ضمنی انتخابات کی حکمت عملی سے اختلاف کا فیصلہ کیا۔

ذرائع نے کہا کہ پی پی آج اجلاس میں 3 مرحلوں پرمشتمل حکومت مخالف فارمولاپیش کرے گی، پہلےمرحلےمیں پیپلزپارٹی اجلاس میں ان ہاؤس تبدیلی کی تجویزدے گی، دوسرےمرحلےمیں لانگ مارچ کی کال کافارمولا پیش کیاجائےگا اور تیسرے مرحلےمیں استعفوں کا آپشن استعمال کیا جائے۔

پیپلزپارٹی کی ممکنہ تجاویز بھی سامنے آئی ، جس میں کہا گیا کہ سینیٹ اور ضمنی انتخابات میں ہرصورت حصہ لیا جائے اور پی ڈی ایم حکومت مخالف تحریک کی کامیابی کےلیےحکمت عملی پرنظر ثانی کرے۔

ذرائع کے مطابق آصف زرداری اور بلاول بھٹو ویڈیولنک پرپارٹی کی سی ای سی کی رائے سےآگاہ کریں گے۔

وسری جانب ن لیگ نے پی ڈی ایم سربراہی اجلاس کے لیے اپنی تجاویز تیار کر لیں، مریم نواز پارٹی کی تجاویز اور سی ای سی فیصلے شرکاکے سامنے رکھیں گی ، ن لیگ اپنی تجاویز پیپلز پارٹی کی تجاویز سامنے آنے کے بعد دےگی۔

ذرائع ن لیگ نے کہا کہ ن لیگ ہر حال میں پی ڈی ایم اتحاد کیساتھ اور متفقہ فیصلوں کی پابندی کرے گی، تمام ارکان قومی و صوبائی اسمبلی کے استعفے موصول ہو چکے ہیں۔

ن لیگ نے مؤقف اختیار کیا کہ پی ڈی ایم ابھی اتفاق رائے سے فیصلہ کرے،استعفے دینے کو تیار ہیں ، استعفوں کا آپشن کھلا ہے مگرتمام جماعتیں ایک ساتھ مستعفی ہوں گی، استعفوں پر اتفاق نہیں ہوتا تو سینیٹ ،ضمنی الیکشن میں حصہ لینے میں حرج نہیں اور ضمنی الیکشن جیت کر بھی استعفے دیئے جا سکتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں