ماسکو، افغان امن مذاکرات کا آغاز، طالبان وفد کی شرکت moscow peace talk
The news is by your side.

Advertisement

ماسکو، افغان امن مذاکرات کا آغاز، طالبان وفد کی شرکت

ماسکو: افغانستان میں قیام امن اور قومی مفاہمت سے متعلق ایک روزہ کانفرنس کا انعقاد ہوا جس میں پاکستان، افغانستان، امریکا، چین، بھارت، ایران سمیت پانچ رکنی افغان طالبان کے وفد نے شرکت کی۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق افغانستان امن مذاکرات میں پاکستانی وفد کی قیادت ایڈیشنل فارم سیکریٹری برائے افغانستان کررہے ہیں، پاکستانی وفد نے کہا کہ افغان تنازع کا حل صرف بات چیت ہی سے ممکن ہے، پاکستان امن عمل کے لیے ہر ممکن کوشش کی حمایت کرتا ہے۔

ایک روزہ کانفرنس میں قطر میں افغان طالبان کے دفتر میں پانچ رکنی وفد نے بھی شرکت کی، بھارت اور امریکا کانفرنس میں مبصر کی حیثیت سے شریک ہے۔

قبل ازیں مذاکرات کا آغاز روسی وزیر خارجہ سرگئی لاروف کی تقریر سے ہوا جن کا کہنا تھا کہ روس افغانستان میں امن کے لیے اپنی کوششیں جاری رکھے گا اور امید ہے کہ ماسکو اجلاس میں افغانستان امن عمل سے متعلق سنجیدہ اور تعمیراتی بات چیت ہوگی۔

روسی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ روس افغانستان میں گزشتہ 17 سالوں سے جاری خانہ جنگی کے حل کے لیے فریقین کے درمیان مذاکرات کو فروغ دینا چاہتا ہے۔

سرگئی لاروف نے کہا کہ مذاکرات میں حکومت اور طالبان کی موجودگی براہ راست مذاکرات میں معاون ثابت ہوگی۔

واضح رہے کہ طالبان اور افغانستان کے درمیان جنگ کے خاتمے کے لیے قطر میں طالبان کا سیاسی دفتر بھی کھولا گیا ہے جہاں امریکی فوج اور افغان حکومت کے اعلیٰ حکام نے طالبان نمائندوں سے گفت و شنید بھی کی تاہم اب تک حتمی نتیجے پر نہیں پہنچا جاسکا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں