The news is by your side.

Advertisement

میرےمتعلق مستقل غلط خبریں چلائی گئیں، فروغ نسیم

اسلام آباد: رضاکارانہ طور پر وزیر قانون کے عہدے سے مستعفی ہونے والے فروغ نسیم نے وکالت نامہ معطل ہونے کی خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ میرے متعلق غلط خبریں چلائی گئیں۔

تفصیلات کے مطابق اےآروائی نیوزسےخصوصی گفتگو کرتے ہوئے بیرسٹرفروغ نسیم نے کہا کہ میرالائسنس معطل نہیں ہوا، پاکستان بارکونسل کےپاس لائسنس معطلی کاکوئی جوازنہیں، میرےلائسنس پرسپریم کورٹ،اٹارنی جنرل کا آرڈرموجودہے۔

انہوں نے بتایا کہ کل عدالت میں آرمی چیف کاوکیل ہوں گا، خودکورضاکارانہ طورپرپیش کیا میں قوم کیلئےہمیشہ حاضر ہوں، وزیراعظم عمران خان نےمجھ سےکہاآپ کابڑااحسان ہوگا، کیس بعدکابینہ میں‌فوراً واپس آنا۔

بیرسٹر فروغ نسیم کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ میں آرمی چیف کا کیس لڑوں گا، وفاق کی جانب سےوکالت پرفی الحال فیصلہ باقی ہے، وزیراعظم مجھ پر برہم نہیں ہوئے،غلط خبرچلائی گئی، وزیراعظم سےکہا کہ آرمی چیف نےزبردست کام کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم مستعفی

یاد رہے کہ سپریم کورٹ نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدت ملازمت میں توسیع کانوٹیفکیشن معطل کرتے ہوئے آرمی چیف، وزارت دفاع اور اٹارنی جنرل کو نوٹس جاری کردیئے اور جواب طلب کیا ہے۔

وفاقی وزیر شیخ رشید کا کہنا ہے کہ وزیرقانون فروغ نسیم نےکابینہ اجلاس میں استعفیٰ پیش کیا اور فروغ نسیم کل بطوروکیل حکومتی مؤقف عدالت میں پیش کریں گے، فروغ نسیم کل وکیل کی حیثیت سےجنرل باجوہ کاکیس لڑیں گے

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں