The news is by your side.

Advertisement

’وزیراعظم کوکہا درگزر کی پالیسی اپنائیں اسی میں فائدہ ہے‘

اسلام آباد: حکمران جماعت کے اتحادی (ق) لیگ کے مرکزی رہنما پرویز الہیٰ نے کہا ہے کہ وزیراعظم کوکہا تھا درگزرکی پالیسی اپنائیں اسی میں فائدہ ہے، خدانخواستہ یہاں کچھ ہوگیاتوداغ لگ جائے گا جو دھونا مشکل ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق اے آر وائی کے پروگرام ’پاور پلے‘ میں بات کرتے ہوئے پرویز الہیٰ کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان نےکھلےدل سےمولانا فضل الرحمان کو مارچ کرنےکی اجازت دی، وزیراعظم نےمارچ والوں کوکہیں روکنےکی ہدایت نہیں کی۔

پرویزالہیٰ نے کہا کہ فضل الرحمان کوبھی کریڈٹ جاتاہے کہ کچھ نقصان نہیں ہوا، مولانافضل الرحمان صرف استعفیٰ مانگ رہےتھے مگر بھروسےکی بنیاد پرمارچ ختم کرانےمیں کرداراداکیا، استعفےکےمطالبےپرفضل الرحمان اب بھی قائم ہیں جہاں راستے بلاک کریں گےوہاں بھی عام لوگوں کوراستہ دیاجائے گا۔

انہوں نے کہا کہ کمیٹی میں واضح کہاتھا کہ نوازشریف کوجانےدیں، وزیراعظم کوکہادرگزرکی پالیسی اپنائیں اسی میں فائدہ ہے، خدانخواستہ یہاں کچھ ہوگیاتوداغ لگ جائےگاجودھونامشکل ہوگا۔

پرویز الہیٰ کے بقول وزیراعظم کوبتایا کہ بھٹوصاحب کاواقعہ لوگ آج تک نہیں بھولے، بہترسیاسی ماحول کیلئےسخت رویےترک کرناہوں گے، صورتحال سے بچنے کیلئے افہام وتفہیم کی پالیسی ضروری ہے، اگر حکومت ڈیلیور کرے تو پھر سارےمعاملات ٹھیک ہوجاتےہیں۔

انہوں نے کہا کہ نوازشریف کوسیاست کرنےکیلئےدوبارہ پاکستان آناہوگا اگرنوازشریف واپس نہیں آئےتوسیاست نہیں سنبھال سکیں گے۔

پرویز الہیٰ نے کہا کہ حکومت سےکوئی وزارت نہیں مانگی، مونس الہیٰ یا ق لیگ کاکوئی دوسرارکن وزارت نہیں مانگ رہا، عمران خان کوکہاتھاجب تک آپ وزیراعظم ہیں ساتھ دیں گے، عثمان بزداراوران کےوالدسےبھی اچھے تعلقات ہیں،ہم توچاہتےہیں عثمان بزدارکوتبدیل نہ کیاجائے، چاہتےہیں حکومت ہمارےساتھ بھائی چارےوالاتعلق رکھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں