The news is by your side.

Advertisement

آئین شکنی کیس کا فیصلہ محفوظ ، پرویز مشرف نے عدالت سے رجوع کرلیا

اسلام آباد : سابق صدر پرویزمشرف نے خصوصی عدالت کے فیصلہ محفوظ کرنے کیخلاف عدالت سے رجوع کرلیا، جس میں کہا گیا عدالت نے مؤقف سنے بغیر کیس کا فیصلہ محفوظ کیا، کیس کی سماعت تندرست ہونےتک ملتوی کی جائے۔

تفصیلات کے مطابق سابق صدر پرویزمشرف نے آئین شکنی کیس میں خصوصی عدالت کے فیصلہ محفوظ کرنے کیخلاف درخواست دائر کردی ، جس میں وفاقی حکومت،وزارت قانون وانصاف، ایف آئی اے اور رجسٹرارخصوصی عدالت کو فریق بنایا گیا ہے۔

درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ خصوصی عدالت نے19نومبرکومؤقف سنے بغیرکیس کا فیصلہ محفوظ کیا، بیماری کی وجہ سے بیرون ملک زیرعلاج مقیم ہوں، بیماری کی وجہ سےخصوصی عدالت میں مؤقف پیش نہیں کرسکا۔

درخواست میں استدعا کی گئی سپریم کورٹ کے فیصلوں کے مطابق سماعت دوبارہ شروع کی جائے اور خصوصی عدالت کا فیصلہ محفوظ کرنے کا حکم معطل کیا جائے۔

مزید پڑھیں : پرویزمشرف کے خلاف آئین شکنی کیس کا فیصلہ محفوظ ، 28 نومبر کو سنایا جائے گا

درخواست میں کہا گیا عدالت کیس کی سماعت تندرست ہونےتک ملتوی کرنے اور غیرجانبدارمیڈیکل بورڈتشکیل دینے کا حکم دے۔

یاد رہے 19 نومبر کو خصوصی عدالت نے سابق صدر پرویز مشرف کے خلاف آئین شکنی کیس کا فیصلہ محفوظ کیا تھا، جو 28 نومبر کو سنایا جائے گا، فیصلہ یک طرفہ سماعت کے نتیجے میں سنایا جائے گا۔

عدالت نے پرویز مشرف کے وکلا کو دفاعی دلائل سے روک دیا تھا اور پراسیکیوشن کی نئی ٹیم مقرر کرنے کا حکم دیا تھا ، نئی ٹیم مقرر کرنے میں تاخیر پر عدالت نے بغیر سماعت فیصلہ محفوظ کیا، عدالت کا کہنا تھا کہ مشرف کے وکیل چاہیں تو 26 نومبر تک تحریری دلائل جمع کرادیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں