پرویز مشرف آئین شکنی کیس: فیصلہ آج 4 بجے سنایا جائے گا -
The news is by your side.

Advertisement

پرویز مشرف آئین شکنی کیس: فیصلہ آج 4 بجے سنایا جائے گا

اسلام آباد : خصوصی عدالت میں پرویز مشرف آئین شکنی کیس میں تحقیقات از سرنو شروع کرنے کے بارے میں فیصلہ آج 4 بجے سنایا جائے گا۔

جسٹس فیصل عرب کی سربراہی میں تین رکنی خصوصی عدالت کے سامنے سابق صدر پرویز مشرف کے وکیل فروغ نسیم نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت اسلام آباد ہائی کورٹ میں خود تسلیم کر چکی ہے کہ سابقہ تحقیقات میں خامیاں تھیں اور تحقیقات درست انداز میں نہیں کی گئیں۔

فروغ نسیم نے کہا کہ از سر نو تحقیقات کے لیے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی جائے تاکہ غیر جانبدارنہ تحقیقات ہو سکے ۔

فروغ نسیم نے کہا کہ جے آئی ٹی کی تحقیقات کی روشنی میں پرویز مشرف سمیت دیگر کا ٹرائل ایک ساتھ کرنے میں ہمیں کوئی اعتراض نہیں ۔حکومت کے وکیل پراسکیوٹر اکرم شیخ نے کہا کہ وفاقی حکومت اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف انٹرا کورٹ اپیل دائر کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔

انٹرا کورٹ اہپیل کے فیصلے کی روشنی میں وفاقی حکومت اگلا قدم اٹحائے گی،خصوصی عدالت نے دلائل سننے کے بعد فیصلہ مھفوظ کر لیا۔

جسٹس فیصل عرب نے ریمارکس دیہتے ہوئَ کہا کہ از سر نو تحقیقات شروع کرنے یا نیہ کرنے کی صوابدید وفاقی حکومت کی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں