The news is by your side.

Advertisement

آئین شکنی کیس:خصوصی عدالت کا پرویز مشرف کے خلاف کاروائی کاآغاز

اسلام آباد: آئین کی سنگین خلاف ورزی کے کیس میں سابق صدر پرویز مشرف کو خصوصی عدالت کی جانب سے اشتہاری قرار دے کر کارروائی شروع کردی گئی ہے.

تفصیلات کے مطابق سابق صدر پرویز مشرف کےخلاف خصوصی عدالت میں زیرسماعت آئین کی سنگین خلاف ورزی کیس میں پرویز مشرف کواشتہاری قرار دینے کیلئے کارروائی کا آغاز کردیا گیا ہے.

اس سلسلے میں اسلام آباد کے علاقے چک شہزاد میں واقع سابق صدر پرویز مشرف کے فارم ہاوس کے باہرعدالتی نوٹس چسپاں کردیا گیاہے.

یاد رہے کہ رواں ماہ 11 مئی کو سماعت میں عدالت نے ڈائریکٹر ایف آئی اے سے سابق صدر کی گرفتاری کی پراستسفارکیا تو انہوں نے جواب دیا تھا کہ’’پرویزمشرف ملک سے باہرجاچکے ہیں لہذا ان کی گرفتاری ممکن نہیں ہے‘‘.

عدالت کا کہنا تھا کہ اگر ان کی گرفتاری ممکن نہیں ہے تو ضابطے کے مطابق سابق صدرکی جائیداد کی ضبطی اورضامن کی ضمانت بھی ضبط کی جائے گی.

پرویز مشرف کے ضامن بریگیڈیئر (ر) راشد قریشی نے 25 لاکھ روپے زرِ ضمانت جمع کرایا تھا جسے ضبط کر لیاگیا تھا اورعدالت کا مزید کہنا تھا کہ ان کی جائیداد بھی ضبط کی جاسکتی ہے.

دوسری جانب عدالت نے سابق صدر پرویز مشرف کی جائیداد کی تفصیلات ایف آئی اے سے طلب کرلی تھی تاکہ قانون کے مطابق اسے ضبط کیا جاسکے.

عدالت نے مزید کاروائی کے لیے سماعت 12 جولائی تک ملتوی کردی تھی.

واضح رہے کہ سندھ ہائی کورٹ نے سابق صدرپرویزمشرف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا حکم جاری کیا تھا جس کے خلاف وفاق نے سپریم کورٹ میں اپیل دائر کی تھی.

عدالت عظمیٰ نے سندھ ہائیکورٹ کا فیصلہ برقرار رکھا تھا۔ وفاق کی جانب سے نام ای سی ایل سےنکالنےکےبعد سابق صدربیرون ملک روانہ ہوئے تھے.

گزشتہ ماہ کے اوائل میں عبدالرشید غازی قتل کیس کی سماعت کے دوران اسلام آبادکے ایڈیشنل سیشن جج پرویزالقادرمیمن نے بھی سابق صدر کی بیرونِ ملک روانگی پراظہارِ برہمی کیا تھا.

واضح رہے کہ سابق صدر پرویز مشرف ان دنوں علاج کے سلسلےمیں بیرون ملک مقیم ہیں.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں