The news is by your side.

Advertisement

پشاور ایئرپورٹ پر مسافروں سے نامناسب رویہ پر وفاقی وزیر نے نوٹس لے لیا

کراچی : پشاور ایئرپورٹ پر برطانیہ سے آنے والے دو سینئر ڈاکٹرز میاں بیوی سے ایف آئی اے امیگریشن کے عملے کی جانب سے نامناسب رویہ پر وزارت ہوا بازی نے نوٹس لے لیا۔

اے آر وائی نے ایف آئی اے ایمیگریشن عملے سے متعلق خبر نشر کی تھی، وفاقی وزیر ہوابازی غلام سرور خان نے ملتان ائیرپورٹ پر پاکستانی ڈاکٹروں کی تضحیک کا نوٹس لیتے ہوئے سول ایوی ایشن اتھارٹی کے چیف آپریٹنگ آفیسر کو تحقیقات کا حکم دیتے ہوئے24 گھنٹے کے اندر تحقیقات مکمل کر نے کی ہدایت کردی۔

ہدایات ملتے ہی فوری طور پر عمل درآمد کرتے ہوئے پشاور ایئر پورٹ انتظامیہ نے اے ایس ایف سے سی سی ٹی فوٹیجزز بھی حاصل کرلیں ایئر پورٹ مینجر نے اتوار کی صبح ایف آئی اے کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر اور عملے کو طلب کر لیا۔

واضح رہے کہ برطانیہ سے پشاور پہنچنے والے ڈاکٹر میاں بیوی سے امیگریشن عملے نے تضحیک کی تھی جس برطانیہ سے آئے ہوئے مسافروں نے سول ایوی ایشن اتھارٹی کو ایف آئی اے عملے کے خلاف شکایت درج کرائی تھی۔

ملتان ایئر پورٹ کے واقعے کے بعد یہ آج یہ دوسرا واقعہ پشاور ایئر پورٹ پر پیش آیا تھا۔ دونوں میاں بیوی برطانیہ میں سئنیر ڈاکٹرز ہیں جو غیر ملکی پرواز سے آج پشاور پہنچے تھے۔

ایف آئی اے ایمگریشن حکام نے ڈاکٹر قدسیہ نامی مسافر کے پاسپورٹ پر امیگریشن کی اسٹامپ نہیں لگائی تھی، ڈاکٹر قدسیہ نے پاسپورٹ دیکھ کر عملے کو کہا کہ پاسپورٹ پر مہر نہیں لگی ہوئی،۔

اس پر ایف آئی اے کی خاتون اہلکار مسافر ڈاکٹر قدسیہ سے الجھ پڑی اور نازیبا الفاظ کا استعمال کیا، واقعے کے بعد خاتون مسافر اور ایف آئی اے عملے کے درمیان تلخ کلامی بھی ہوئی تھی۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں