The news is by your side.

Advertisement

پختونخوا میں بلدیاتی انتخابات، پریذائیڈنگ افسر اور ان کے شوہر گرفتار

پشاور: خیبر پختون خوا میں بلدیاتی انتخابات کا دنگل سجنے سے قبل ہی دھاندلی کی مبینہ کوشش سامنے آنے پر خاتون پریذائیڈنگ افسر اور ان کے شوہر کو گرفتار کر لیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق پختون خوا میں بلدیاتی انتخابات کے سلسلے میں لائے گئے پشاور کی نیبرہڈ کونسل 33 اور 34 میں بیلٹ پیپرز کھلنے پر شدید ہنگامہ آرائی ہوئی، مختلف جماعتوں کے کارکنان موقع پر پہنچ گئے اور مبینہ دھاندلی کے خلاف نعرے بازی شروع کر دی۔

خاتون پریذائیڈنگ افسر اپنے مقامی رہنما شوہر کو پولنگ اسٹیشن کے اندر لے گئی تھیں، جس پر اپوزیشن نے شور مچایا، پولیس نے میاں بیوی کو ہجوم سے بچایا اور پھر گرفتار کر لیا، عوامی نیشنل پارٹی اور جے یو آئی نے پاکستان تحریک انصاف پر دھاندلی کرانے کا الزام لگا دیا ہے۔

 اس دوران اسسٹنٹ صوبائی الیکشن کمشنر شریف اللہ بھی موقع پر پہنچ گئےتھے، انھوں نے کہا پریذائیڈنگ افسر اور ان کے شوہر کو گرفتار کر لیا ہے، دھاندلی میں جو بھی ملوث ہوگا اس کے خلاف کارروائی کی جائے گی، اور پولنگ کے لیے نیا عملہ تعینات کیا جائے گا۔

انھوں نے کہا انتخابی مواد محفوظ ہے، اب نئے عملے کو ریٹرننگ افسر کے حوالے کیا جائے گا، کہیں سے دھاندلی کی اطلاع آئی تو عملے کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

پی ٹی آئی رہنما

شوکت یوسفزئی نے کہا کہ اپوزیشن نے انتخابات سے پہلے ہی شکست تسلیم کر لی، پیپلز پارٹی نے دھاندلی کا شور کر کے مبینہ طور پر ڈراما رچایا، پی پی کے جیالے آخر کیسے اسکول کے اندر پہنچے، اپوزیشن انتخابات سے راہ فرار اختیار کرنا چاہتی ہے۔

انھوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن اپنا مؤقف واضح کرے، کیسے دھاندہی ہوئی ذرا بتایا جائے، بیوروکریسی کو ٹارگٹ کرنا افسوس ناک ہے، ہم شفاف اور غیر جانب دار انتخابات پر یقین رکھتے ہیں، صوبائی حکومت کو بدنام کرنے کی سازش ناکام ہوگی۔

میدان کل سجےگا

خیبر پختون خوا کے 17 اضلاع میں بلدیاتی انتخابات کا میدان کل سجےگا، انتخابی سامان کی ترسیل ہو چکی، ایک کروڑ 26 لاکھ سے زائد ووٹرز حق رائے دہی استعمال کر سکیں گے، میئر اور تحصیل چیئرمین کی 66 نشستوں کے لیے 689 امیدوار میدان میں، خواتین کی نشستوں پر 3 ہزار 870، کسانوں کی نشستوں پر 7 ہزار اور نوجوانوں کی نشستوں پر 6 ہزار 11 اور اقلیتی نشستوں پر 293 امیدواروں میں مقابلہ ہوگا۔

ایک افسوس ناک خبر یہ ہے کہ الیکشن سے ایک روز قبل ڈیرہ اسماعیل خان میں اے این پی کا سٹی میئر کا امیدوار قتل ہو گیا، عمر خطاب شیرانی کوگھر کے باہر نشانہ بنایا گیا، اے این پی کے کارکنوں نے واقعے پر احتجاج کیا، واقعے کے بعد سٹی میئر کی نشست پر انتخاب ملتوی کر دیا گیا ہے۔

ووٹ مانگ کر شرمندہ نہ کریں

پشاور کے علاقے نوتھیہ کے محلے جمعہ خان کے مکین عوامی نمائندوں سے ناراض نظر آ رہے ہیں، اس ناراضی کے اظہار کے لیے انھوں نے بینر لگا دیا جس پر لکھا ہے کہ ووٹ مانگ کر شرمندہ نہ کریں۔

اہل علاقہ کا کہنا ہے کہ گیس پائپ لائن کا کام برسوں سے تاخیر کا شکار ہے، نکاسئ آب کی لائنیں ڈالی گئیں نہ ہی سڑکوں کی تعمیر ہوئی، عوامی نمائندے ووٹ لینے کے بعد غائب ہو جاتے ہیں، ووٹ چاہیے تو پہلے ہمارے مسائل حل کریں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں