The news is by your side.

Advertisement

عدلیہ مخالف تقریر، سابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف ایک اور درخواست دائر

لاہور : سابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف عدلیہ مخالف تقریر کرنے پر ایک اور درخوست دائر کردی گئی۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں سابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف عدلیہ مخالف تقریر کرنے پر ایک اور درخوست دائر کردی گئی، درخواست مقامی شہری سید محمود اختر نقوی کی جانب سے دائر کی گئی۔

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ 25 اگست کو نواز شریف نے ایوان اقبال میں وکلاء کی ایک تقریب سے خطاب کیا، جس میں پانامہ فیصلے پر شدید تنقید کی اور فیصلے کو انصاف کے برعکس قرار دیا، نواز شریف نے سپریم کورٹ کے فیصلے پر جو بارہ سوالات اٹھائے ان کے ذریعے عدلیہ کو متنازع بنانے کی کوشش کی۔

دائر درخواست کے مطابق سابق وزیر اعظم کا بیان توہین عدالت کے زمرے میں آتا ہے، ہائی کورٹ نے پیمرا کو میڈیا پر توہین آمیز مواد نشر کرنے سے روکنے کا حکم دیا مگر اس پر عمل نہیں کیا گیا اور سابق وزیراعظم کی انتہائی توہین آمیز تقریر نشر کرنے کی اجازت دی گئی۔

درخواست گزار نے استدعا کی کہ نواز شریف کے خلاف عدلیہ مخالف تقاریر کرنے پر توہین عدالت کی کارروائی کی جائے۔


مزید پڑھیں :   وکلاء کنونشن سے خطاب‘ نوازشریف کی ایک بارپھرعدلیہ پرتنقید


یاد رہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف نے آج ایوانِ اقبال میں منعقدہ مسلم لیگی وکلاء کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عدلیہ کی آزادی کیلئےوکلانےجاندارتحریک چلائی،سختیاں برداشت کیں‘ آج بھی وکلاپربھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے۔

نوازشریف کا یہ بھی کہنا تھا کہ منتخب رہنماجیلوں میں سڑتےاورملک بدر ہوتے رہےجب کہ آمر حکومت کرکے سکون سےبیرون ملک جاتے رہے ایسے سوراخوں کوبندکرناہو گاجہاں سے جمہوریت کا ڈسا جاتا ہے۔


اگرآپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اوراگرآپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس  وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں