نواز شریف کے پارٹی صدر کے نوٹیفیکیشن کو کالعدم قرار دینے کےلیے درخواست دائرNawaz
The news is by your side.

Advertisement

نواز شریف کے پارٹی صدر کے نوٹیفیکیشن کو کالعدم قرار دینے کےلیے درخواست دائر

لاہور: میاں نواز شریف کے پارٹی صدر کے نوٹیفیکیشن کو کالعدم قرار دینے کےلیے درخواست دائر کردی گئی۔

تفصیلات کے مطابق نواز شریف کے پارٹی صدر کے نوٹیفیکیشن کو کالعدم قرار دینے کےلیے سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں درخواست دائر کردی گئی، درخواست عوامی تحریک کے رہنما اشتیاق چودھری کی جانب سے دائر کی گئی۔

درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ الیکشن ایکٹ 2017 آئین اور اسلامی تعلیمات کے خلاف ہے ، الیکشن ایکٹ کے تحت ایک نااہل شخص کو اتنے اختیارات دے دیئے گئے ہیں کہ وہ ملک میں اپنی مرضی سے قانون سازی کروا سکے۔

درخواست گزار کا کہنا ہے الیکشن ایکٹ پر عمل سے ملک بنانا ریپبلک بن جائے گا، عدالت الیکشن ایکٹ کو غیر آئینی اور نواز شریف کے پارٹی صدارت کے نوٹیفکیشن کو کالعدم قرار دے۔


مزید پڑھیں : انتخابی اصلاحات بل 2017: پاکستان عوامی تحریک نے بھی نے عدالت سے رجوع کرلیا


یاد رہے اس سے قبل  پاکستان عوامی تحریک  انتخابی اصلاحات ایکٹ  کو چیلنج کر چکی ہے، پاکستان عوامی تحریک کے اشتیاق چوہدری کی جانب سے دائر درخواست میں کہا گیا تھا کہ انتخابی اصلاحات ایکٹ سے نا اہل شخص پارٹی صدر بن سکتا ہے، اس ایکٹ سے دہشت گرد، اور مافیا سربراہ ملکی سیاسی باگ ڈور سنبھال سکتے ہیں۔

درخواست میں استدعا کی گئی تھی  کہ انتخابی اصلاحات ایکٹ 2017 کو آئین کے منافی اور کالعدم قرار دیا جائے۔

واضح رہے کہ دو روز قبل نااہل نواز شریف کو مسلم لیگ ن کی صدارت کا اہل بنانے کے لیے انتخابی اصلاحات ایکٹ 2017 سینیٹ کے بعد قومی اسمبلی میں بھی منظور کرایا گیا تھا۔

بل کی شق 203 میں کہا گیا ہے کہ ہر پاکستانی شہری کسی بھی سیاسی جماعت کی رکنیت اور عہدہ حاصل کرسکتا ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں