The news is by your side.

Advertisement

مولانا فضل الرحمان کا پلان بی روکنے کے لئے درخواست دائر

لاہور : جمیعت علمائے اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کے پلان بی کو روکنے کے لئے درخواست دائر کردی گئی، جس میں کہا گیا ہے کہ پلان بی غیرقانونی اورغیرآئینی قرار دے کر کالعدم کیا جائے اور مولانا فضل الرحمان ودیگر کے خلاف فوجداری کارروائی کا حکم دیا جائے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں جمیعت علمائے اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کے پلان بی کو روکنےکےلئے درخواست دائر کردی ہے، درخواست شہری عرفان علی نے ندیم سرورایڈووکیٹ کے ذریعے دائر کی، درخواست میں وفاقی حکومت اور مولانا فضل الرحمان سمیت دیگر کو فریق بنایا گیا ہے۔

درخواست گزار نے مؤقف اختیار کیا ہے کہ مولانا کا سڑکیں بند کرنے کاحکم آئین کی خلاف ورزی ہے، آئین کے تحت شہریوں کے حقوق کا تحفظ حکومت کی ذمہ داری ہے، مولانا کا پلان بی غیرقانونی اورغیرآئینی قرار دے کر کالعدم کیا جائے، استدعا ہے مولانا فضل الرحمان ودیگر کیخلاف فوجداری کارروائی کاحکم دیاجائے۔

مزید پڑھیں : جے یو آئی نے چھتر پلین کے مقام پر شاہراہ قراقرم بلاک کر دی

خیال رہے جے یوآئی ف کی جانب سے پلان بی کے تحت مختلف شہروں میں دھرنے دیئے جارہے ہیں، مولانا کے کارکنوں نے کئی اہم شاہراہیں بند کر دیں، جس سے مسافر رُل گئے، گھوٹکی میں بارش کے باوجود قومی شاہراہ پر جے یو آئی آزادی مارچ کا دھرنا جاری ہے۔

قومی شاہراہ پرجےیو آئی کےدھرنےکےباعث دونوں اطراف ٹریفک معطل ہے، دھرنے کےمقام پرکارکنان نےشامیانےلگادیئے ہیں، دھرنے کے شرکاء کا کہنا ہے کہ مرکزی قیادت کےحکم پرچھوٹی بڑی مسافر گاڑیوں اور ایمبولینسز کوراستہ دیاجارہاہے جبکہ دھرنے کے باعث سامان سے لدے ٹرکوں کی لمبی قطاریں  لگ گئی ہیں۔

کراچی میں حب ریورروڈ ٹریفک کیلئے بند ہیں ،اسلام آباد میں کارکن پشاور روڈ پر بیٹھ گئے ہیں جبکہ مانسہرہ میں چھترپلین کے مقام پر شاہراہ قراقرم بلاک  اور لکی مروت میں انڈس ہائی وے بنوں لنک روڈ ٹریفک کے لیے بندکردیا گیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں