The news is by your side.

Advertisement

یوکرین کے سابق صدر کی ملک سے فرار کی کوشش

کیف: یوکرین کے سابق صدر پیٹرو پوروشنکو نے سرحد پار کر کے پولینڈ میں داخل ہونے کی کوشش کی، تاہم ان کی فرار کی کوشش ناکام بنا دی گئی۔

تفصیلات کے مطابق یوکرینی میڈیا نے خبر دی ہے کہ سابق یوکرینی صدر کو اپنی رینج روور ایس یو وی میں لیووف کے علاقے کے مغرب میں ایک کراسنگ پر دیکھا گیا، اسٹیٹ کسٹمز سروس کے ذرائع کا کہنا ہے کہ پوروشنکو ملک سے فرار ہونے کی کوشش کر رہے تھے۔

میڈیا کا کہنا ہے کہ پیٹرو پوروشنکو کو یوکرین کے اندر غداری کے الزامات کا سامنا ہے، وہ ملک سے فرار ہو کر پولینڈ میں داخل ہونا چاہتے تھے لیکن سرحدی محافظوں نے انھیں روک لیا۔

اس سلسلے میں ٹیلی گرام پر کچھ تصاویر سامنے آئی ہیں، جن میں سابق یوکرینی صدر کسٹم حکام سے بات کرتے نظر آتے ہیں۔

دوسری طرف یوکرین کی سیاست دان ارینا گیراشنکو نے ٹیلی گرام پر لکھا کہ سابق صدر کو روکا جانا ایک ناگوار سیاسی حکم ہے، پوروشنکو کے پاس لتھوانیا میں نیٹو کی پارلیمانی اسمبلی میں شرکت کے لیے پارلیمنٹ کی جانب سے ملا سفری خط موجود تھا، کیوں کہ ضابطے کے مطابق تو وہ اب بھی یوکرینی پارلیمنٹ کے رکن ہیں۔

سرحدی محافظوں کا کہنا تھا کہ ان کے پاس ایسا کوئی حکم موجود نہیں ہے کہ آیا سابق صدر کو ملک چھوڑنے دیا جائے یا نہیں۔

یاد رہے کہ دسمبر 2021 میں موجودہ حکومت نے پوروشنکو پر 2014-15 میں دونباس علیحدگی پسندوں سے کوئلہ خریدنے کی مبینہ اسکیم میں غداری کا الزام لگایا تھا، اس کے بعد وہ وہ ترکی بھی گئے تاہم جنوری میں کیف واپس آ گئے۔

حکومت کی جانب سے سابق صدر کو جیل بھیجنے یا گھر میں نظر بند رکھنے کی کوشش بھی کی گئی تاہم عدالت نے اس درخواست کو مسترد کر دیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں