The news is by your side.

Advertisement

فائزر کی کرونا ویکسین کے حوصلہ افزا اثرات

امریکی فارماسیوٹیکل کمپنی فائزر کی تیار کردہ کرونا ویکسین اس وقت دنیا کے متعدد ممالک میں استعمال کی جارہی ہے، اب حال ہی میں ماہرین نے اس کے حوصلہ افزا اثرات کی طرف اشارہ کیا ہے۔

حال ہی میں ہونے والی 2 تحقیقی رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ فائزر اور بائیو این ٹیک کی تیار کردہ کووڈ 19 ویکسین نئے کرونا وائرس کے پھیلاؤ میں نمایاں کمی لانے میں کامیاب ثابت ہوئی ہے۔

تحقیق کے نتائج سے عندیہ ملتا ہے کہ یہ ویکسین وائرس کے پھیلاؤ میں نمایاں کمی لاتی ہے، جبکہ علامات اور بغیر علامات والے کیسز کی تعداد میں بھی واضح کمی آتی ہے۔

19 فروری کو جاری اس تحقیق میں بتایا گیا کہ اس ویکسین کے استعمال سے کووڈ 19 کے علامات والے کیسز میں 15 سے 28 دن کے دوران 85 فیصد کمی آئی جبکہ بغیر علامات والے کیسز کی شرح میں 75 فیصد کمی دیکھنے میں آئی۔

محققین کا کہنا تھا کہ یہ نتائج اہم ترین پیشرفت ہیں، 75 یا 90 فیصد کمی معنی نہیں رکھتی، بلکہ اہم بات وائرس کے پھیلاؤ میں نمایاں کمی ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس کا مطلب ہے کہ اس سے نہ صرف ویکسین استعمال کرنے والے کو تحفظ ملتا ہے بلکہ یہ اس کے ارگرد موجود افراد کو بھی تحفظ فراہم کرتی ہے۔

دوسری تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ اس ویکسین سے علامات والے کیسز کی شرح میں 94 فیصد جبکہ بغیر علامات والے کیسز کی شرح میں 89 فیصد کمی آتی ہے۔

تاہم محققین کا کہنا تھا کہ ویکسی نیشن ایک بہت اچھا ٹول ہے مگر اس سے وبا کا اختتام مشکل لگتا ہے، یہ ایک ایسا وائرس ہے جس نے اپنی رفتار سے سائنسی دنیا کو حیران کردیا تھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ نتائج حوصلہ افزا ہیں مگر ان کی مکمل تصدیق کے لیے مزید تحقیق کی ضرورت ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں