The news is by your side.

Advertisement

مردہ لال بیگوں پر مصوری کے شاہکار

فلپائن میں  ایک  مصورہ  نے  اچھوتے فن کا مظاہرہ کرتے ہوئے مردہ لال بیگوں پر خوبصورت پینٹگز کرکے سب کو ورطہ حیرت میں ڈال دیا۔

ایک اچھے فنکار کی خوبی ہوتی ہے کہ وہ ہر دم کچھ نیا کرنے کی جستجو میں رہتا ہے اور اسی کوششوں میں ایسے فن پارے تخلیق پاجاتے ہیں جنہیں دنیا سراہتی ہے۔

آپ کا اپنی زندگی میں بہت ساری ایسی خواتین سے واسطہ پڑتا ہوگا جو گھروں، دفاتر میں پائے جانے والے لال بیگ سے انتہائی خوفزدہ ہوتی ہیں اور وہاں قدم بھی نہیں رکھتیں جہاں یہ حشرات الارض نظر آجائے، مگر ہم آپ کو ایک ایسی خاتون کے بارے میں بتارہے ہیں جنہوں نے ڈرنے کے بجائے اپنے فن کو اچھوتے انداز میں پیش کرنے کے لیے مردہ لال بیگوں کا انتخاب کیا۔

غیرملکی نیوز ایجنسی کے مطابق فلپائن کے دارالحکومت منیلا کی رہائشی برینڈا ڈیلگاڈو نامی فنکارہ مردہ لال بیگوں پر اب تک ہالینڈ کے مصور ونسینٹ وین، افسانوی کردار مارول وینم، تاروں بھری رات، سرسبز نظارے ودیگر پینٹ کرچکی ہیں۔

اس حوالے سے برینڈا کا کہنا ہے کہ اسے یہ اچھوتا خیال اس وقت آیا جب وہ اپنے کام کی جگہ مرے ہوئے لال بیگ ہٹا رہی تھی، اسی دوران میری نظر انکے چمکدار اور ہموار پروں پر پڑی۔

برینڈا نے  بتایا کہ مردہ لال بیگوں کو دیکھ کر میں نے سوچا کہ اسے اپنا کینوس بنایا جائے  اور یہ بہت ہی انوکھا آئیڈیا تھا۔

فنکارہ نے مردہ لال بیگوں پر آئل پینٹ کا استعمال کرتے ہوئے کئی شاہکار تخلیق کیے جن میں پورٹریٹ، افسانوی کردار، سینریز، تاروں بھری رات کا دلفریب منظر شامل ہیں۔

تیس  سالہ مصورہ کا کہنا ہے کہ جب بھی آپ کو کوئی اچھوتا آئیڈیا آئے تو اپنے چھپے ہوئے ہنر کے اظہار کے لیے گھبرائیں نیہں، کیونکہ آپ ناممکن بھی ممکن بناسکتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں