The news is by your side.

Advertisement

کراچی: نوجوان کو قتل کرنے والے پولیس اہل کاروں کا جسمانی ریمانڈ

کراچی: کینٹ اسٹیشن کے قریب پولیس اہل کاروں کی فائرنگ سے نوجوان کی موت کے کیس میں گرفتار تین اہل کاروں کا جسمانی ریمانڈ منظور کر لیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز کینٹ اسٹیشن کے قریب گاڑی پر فائرنگ کر کے نوجوان نبیل ہوڈ بائے کو قتل کرنے والے پولیس اہل کاروں کو آج انسداد دہشت گردی کی منتظم عدالت میں پیش کیا گیا۔

عدالت نے تینوں پولیس اہل کاروں کو 4 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر دیا، پولیس اہل کاروں میں سب انسپکٹرعبدالغفار، ہیڈ کانسٹیبل آفتاب اور کانسٹیبل محمدعلی شاہ شامل ہیں، ملزمان کے خلاف آرٹلری میدان تھانے میں مقدمہ درج ہے جس میں قتل، اقدام قتل اور دہشت گردی کے دفعات شامل ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  پولیس کے ہاتھوں قتل کروڑ پتی کا مقدمہ درج، اے آر وائی نیوز نے اصل کہانی معلوم کرلی

یہ مقدمہ مقتول کے دوست امام رضا کی مدعیت میں درج کیا گیا تھا، ملزمان نے گزشتہ روز کینٹ اسٹیشن کے قریب مقتول کی گاڑی پر فائرنگ کی تھی جس سے نوجوان نبیل جاں بحق اور دوست امام رضا زخمی ہو گیا تھا۔

تحقیقات میں معلوم ہوا تھا کہ گذری پولیس نے دونوں دوستوں کو چیکنگ کے لیے روکا تھا، پولیس نے گاڑی کی تلاشی لینا چاہی تو بیئر کین کی موجودگی کے باعث انھوں نے گاڑی بھگا دی، جس پر پولیس موبائل نے ان کا پیچھا کیا اور کینٹ اسٹیشن کے قریب گاڑی رکنے پر اہل کار نے فائرنگ کر دی۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں