The news is by your side.

Advertisement

پی آئی اے کے 5 سالہ بزنس پلان پر عملدرآمد شروع

کراچی: پی آئی اے کے 5 سالہ بزنس پلان پر عملدرآمد شروع کردیاگیا، جس کے تحت پی آئی اے کی فلیٹ کو 2023 تک 50 جدیدطیاروں پر مشتمل کردیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی ہدایت پرپی آئی اے کی بحالی کے لئے اقدامات کاآغاز کرتے ہوئے 5 سالہ بزنس پلان پر عملدرآمد شروع کردیاگیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے پی آئی اے ہر سال 4 سے 5 طیارے اپنےفلیٹ میں شامل کرےگی، نئے طیاروں کی شمولیت سے پروازوں میں اضافہ اور مزیدروٹس کھولے جائیں گے، پی آئی اے کی فلیٹ میں چھوٹے اور بڑے طیارے شامل ہوں گے اور 2023 تک 50 جدیدطیاروں پرمشتمل کیاجائے گا۔

ذرائع کے مطابق اقدام سے ادارے کے ریونیو میں اضافہ اور خسارے سے نکلنے میں مدد ملےگی جبکہ پی آئی اے اپنے بوئنگ 777 طیاروں کو اپ گریڈ بھی کر رہا ہے اور طیاروں میں آئی ایس پی، ان فلائیٹ انٹرٹینمنٹ سسٹم بھی نصب کیاجارہاہے۔

آئندہ ہفتے سیالکوٹ سے لندن براہ راست پروازوں کا بھی آغاز کیا جائے گا۔

یاد رہے اپریل میں پی آئی اے کے سی ای او ایئر مارشل ارشد ملک نے وزیراعظم عمران خان سے ملاقات میں نیا 5سالہ بزنس پلان پیش کیا تھا۔

مزید پڑھیں : پی آئی اے سی ای او نے وزیراعظم کو نیا 5 سالہ بزنس پلان پیش کردیا

وزیراعظم نے نئے بزنس پلان اور پی آئی اے میں کفایت شعاری کیلئے اٹھائے جانے والے اقدامات کوسراہتے ہوئے کہا تھا پی آئی اے کودنیا کی بہترین ایئر لائن بنانے کی کوشش کررہے ہیں، پی آئی اے میں ایماندار اور میرٹ کے کلچر کوفروغ دیاجائے۔

سی ای او پی آئی نے نئے بزنس پلان سے متعلق بریفنگ میں بتایا تھا کہ نئے بزنس پلان میں2019 میں ساڑھے 6 ارب روپے کی بچت کریں گے، رواں سال 6 ماہ میں 43 ارب روپے سے زیادہ کا ریوینیو حاصل کیا۔

ارشد ملک کا کہنا تھا پی آئی اے کے بیڑے میں 32جہاز ہیں ، نئے بزنس پلان کےتحت پی آئی اے کا بیڑہ 45 طیاروں پر مشتمل ہوگا اور 5سال کے دوران 25 سے30 روٹوں کا اضافہ کیا جائےگا جبکہ سعودی عرب عرب امارات اور دیگر سیکٹرز پر بھی پروازوں کے شیڈول میں بھی اضافی کیا جائے گا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں