site
stats
پاکستان

پی آئی اے کی “ہوابازی کے عالمی قوانین” سے پہلو تہی

کراچی: پی آئی اے کے طیارے بین الاقوامی قوانین کے تحت بنائے گئے معیار کو پورا نہیں کر پارہے، سرویلنس کیمرے سے عاری طیاروں کو بھی پرواز بھرنے کی اجازت دے دی گئی۔

تفصیلات کے مطابق پی آئی اے نے بین الاقوامی قوانین نظرا نداز کرتے ہوئے لیز پر حاصل کیے گئے دو بوئنگ 777 طیاروں کے کاک پٹ میں سرویلنس کیمرے نہیں لگائے ۔

یاد رہے کہ نائن الیون کے سانحے کے بعد بین الاقوامی قوانین میں تبدیلی کرتے ہوئے کاک پٹ میں کیمرا سرویلنس ضروری قرار دی گئی تھی جب کہ سول ایوی ایشن اتھارٹی نے بین الاقوامی قوانین کے بر خلاف دونوں طیاروں کو بغیر سرویلنس کیمروں کے پرواز کی اجازت دے دی ہے۔

ذرائع کے مطابق قومی ایئر لائن کے بوئنگ 777 طیاروں کے ٹوائلٹ خراب ہیں،متعدد بار توجہ دلانے کے باوجود پی آئی اے کا محکمہ انجینئرنگ اس پر کوئی توجہ نہیں دے رہا۔

یاد رہے کہ بوئنگ 777طیارے سعودی عرب،نیو یارک، ٹورنٹو، بیجنگ، لندن کے علاوہ یورپ کے لیے بھی آپریٹ کیےجاتے ہیں۔خدشہ ہے کہ بین الاقوامی ہوا بازی کی انسپکشن ٹیم نے اگر ان طیاروں کا معائنہ کرلیا تو ان طیاروں پر یورپی ممالک جانے پر پابندی بھی عائد ہوسکتی ہے۔

واضح رہے کہ بوئنگ 777 طیارے ایک اہم حکومتی شخصیت کے دباوٴ پر لیے گئے ہیں،جس میں سرویلنس کیمرے نہ ہونے اور ٹوائلٹ کی ناگفتہ بہ حالت کے ساتھ ساتھ کئی سیفٹی ایشوز بھی سامنے آچکے ہیں تا ہم پی آئی اے کی انتظامیہ اس معاملے پر مسلسل غفلت کا مظاہرہ کر رہی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top