پی آئی اے میں جعلی بھرتیوں کا انکشاف -
The news is by your side.

Advertisement

پی آئی اے میں جعلی بھرتیوں کا انکشاف

کراچی : پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائن کی فلائٹ سروسز میں سات سے زائد جعلی شیڈولنگ افسر کی بھرتیوں کا انکشاف ہوا ہے۔

تفصیلات کے مطابق خسارے میں جانے والی قومی ایئرلائن کی نج کاری کا طوفان تھما نہیں تھا کہ ادارے میں جعلی بھرتیوں کا معاملہ سامنے آیا ہے، فلائٹ سروسز میں سات سے زائد شیڈولنگ افسر 14 فروری 2015 میں بھرتی کیے گئے تھے اس حوالے سے متعلقہ ڈپارٹمنٹس سے منظوری بھی لی گئی تھی اور ساتوں افسران کی تنخواہوں کا بل بھی منظور کرلیا گیا ہے۔

گھوسٹ ملازمین کی تنخواہوں کا بل اور فہرست اے آروائی نیوز کو موصول ہوگئی ہے جس کے مطابق ساتوں افسران کا پی آئی اے میں کوئی ریکارڈ موجود نہیں ہے اور نہ افسران ڈیوٹی پر موجود ہیں، اس کے باوجود پی آئی اے کے فنانس منیجر سمیت جنرل منیجر فلائٹ سروسز،ڈائریکٹر ایچ آر نے مبینہ طور پر بائیس لاکھ روپے کی تنخواہ کا بل منظور کرلیاہے جس سے خسارے میں جاتے ادارے کو مزید لاکھوں روپے کا ٹیکا لگا دیا گیا ہے۔

اسی سے متعلق : اسٹیل ملزاورپی آئی اے کی نجکاری آئندہ مالی سال تک مؤخر

واضح رہے عراب امارات سمیت دیگر کئی ممالک کو ہوا بازی کے گر سکھانے اور انہیں منظم و منافع بخش ادارہ بنانے کا امتیاز حاصل کرنے والا پی آئی اے خود کرپشن اور بد انتظامی کے ہاتھوں اس نہج پر پہنچ گیاہےکہ ارباب اختیار اسے  ملکی خزانے پر بوجھ سمجھتے ہوئے،اس سفید ہاتھی سے جان چھڑانا چاہتے ہیں۔

گو کہ پی آئی اے کی نج کاری کے لیے وفاقی سطح پر سنجیدگی سے اقدامات بھی کیے جا رہے ہیں تاہم اس افسوسناک صرت حال کے باوجود بد انتظامی اور کرپشن اپنے عروج پر ہے جس ایک عملی نمونہ حالیہ جعلی بھرتیاں کرکےتنخواہیں اپنی جیبوں میں بھرناہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں