The news is by your side.

Advertisement

پی آئی اے کی نجکاری: ہیڈ آفس سمیت تمام دفاترکی تالابندی کا اعلان

کراچی : پی آئی اے جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے قومی اسمبلی سے پاس کئے گئے ترمیمی بل کے خلاف کل سے پی آئی اے ہیڈ آفس اور پورے پاکستان میں تمام دفاتر کی تالابندی اور دو فروری سے پی آئی اے کا تمام فضائی آپریشن معطل کرنے کا اعلان کیا ہے۔

جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے چیئرمین کیپٹن سہیل بلوچ نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ پی آئی اے پر شب خون مارتے ہوئے پی آئی اے کی نجکاری کے لئے آرڈیننس جاری کیا گیا تھا اس کے بعد قومی اسمبلی میں پی آئی اے کو پبلک کمپنی لمیٹڈ کا بل پاس کروایا گیا جو ہماری سمجھ سے بالاتر ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت اس اہم قومی اثاثے کو بیچنے کیلئے جلد بازی کامظاہرہ کیوں کررہی ہے۔ جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے حکومت کو پانچ مطالبات پیش کیے ہیں۔

جن میں قومی اسمبلی سے پاس کیے گئے ترمیمی بل کو فی الفور واپس لیا جائے، 26 فیصد شیئرز کی فروخت یا ایک فیصد شیئرز کی فروخت یا کسی بھی اسٹریٹجک پارٹنر کی بات ہو ہمیں کوئی بھی قبول نہیں۔

جوائنٹ ایکشن کمیٹی کا کہنا تھا کہ ہمیں ایک موقع دیا جائے اگر ہم ادارے کی بحالی نہ کرسکے تو حکومت جو چاہے فیصلہ کرے ، ہم نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ ایوی ایشن پالیسی کو فی الفور ریویو کیا جائے اور اس سلسلے میں پی آئی اے کے ماہرین خورشید انور، کامران حسن اور صلاح الدین پر مشتمل ایک کمیٹی بنائی جائے جس میں جوائنٹ ایکشن کمیٹی کا ایک ممبر بھی شامل ہو۔

ان مطالبات کی منظوری تک منگل سے پی آئی اے ہیڈ آفس اور پورے پاکستان میں تمام بکنگ آفس اور دفاتر دو فروری تک بند رکھے جائیں گے ، دو فروری کی صبح پی آئی اے کا تمام فضائی آپریشن معطل کردیں گے۔

جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ محنت کشوں کی داد رسی کی جائے ، قومی پرچم بردار اس قومی اہم اثاثے کو نجکاری کی بھینٹ نہ چڑھایا جائے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں