خسارے میں ڈوبے پی آئی اے افسران کی شاہ خرچیاں عروج پر موبائل فون بل کی مد میں تین لاکھ روپے
The news is by your side.

Advertisement

خسارے میں ڈوبے پی آئی اے افسران کی شاہ خرچیاں عروج پر

کراچی : اربوں روپے کے خسارے میں ڈوبی ہوئی قومی ایئرلائن پی آئی اے میں کنٹریکٹ پر بھرتی کئے گئے افسران کی شاہ خرچیاں اپنے عروج پر پہنچ گئیں، انتظامیہ نے ایک افسر کو دوماہ کے موبائل فون بل کی مد میں تین لاکھ روپے ادا کیے۔

تفصیلات کے مطابق پی آئی اے میں تنخواہیں اور  پی ایس او سمیت دیگر اداروں کو  واجبات ادا کرنے کیلئے فنڈز موجود نہیں ہیں لیکن افسران کی شاہ خرچیاں رکنے کا نام نہیں لے رہیں۔

ذرائع کے مطابق اخراجات کا یہ عالم ہے کہ پی آئی اے کے چیف سسٹم آفیسر نے ایک سو تیرہ دنوں میں سینتالیس غیر ملکی دورے کیے، چیف سسٹم آفیسر کے غیر ملکی دوروں میں آن کارپوریشن سروسز کی مد میں (او سی ایس ) سترہ لاکھ روپے کی ادائیگی کی گئی۔

چیف سسٹم آفیسر کو سرکاری طور پر موبائل فون استعمال کرنے پر پندرہ ہزار روپے ادا کئے جاتے ہیں جبکہ مذکورہ افسر کو پی آئی اے نے دو ماہ کے دوران ساڑھے تین لاکھ روپے موبائل فون بل کی مد میں ادا کئے۔

مزید پڑھیں: پی آئی اے کا مالی بحران سنگین، ملازمین تنخواہوں سے محروم

بلوں کی ادائیگی کے حوالے سے دستاویزات اے آروائی نیوز کو موصول ہوگئیں، دستاویزات کے مطابق جنوری میں ڈھائی لاکھ روپے اور فروری میں ایک لاکھ روپے موبائل فون بلوں کی مد میں ادائیگیاں کی گئیں۔

مزید پڑھیں: واجبات کی عدم ادائیگی، پی ایس او کا پی آئی اے کو ایندھن دینے سے انکار

مذکورہ افسر کے پاس آئی ٹی کا تجربہ اور ڈگری نہ ہونے کی بنا پر ان کا عہدہ تبدیل کیا گیا، ذرائع کا  مزیدکہنا ہے کہ اس کے علاوہ ایک اہم شخصیت کی سفارش پر چیف سسٹم آفیسر کے نام پر ایک اور شخص کو بھاری تنخواہ پر بھرتی بھی کیا گیا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں